چونیاں: غلط خون لگانے سے ہسپتال میں خاتون جاں بحق، ورثا کا احتجاج

29 مئی 2017

چونیاں (نمائندہ نوائے وقت) تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال چونیاں غلط گروپ کا خون لگانے سے خاتون جاںبحق، ورثا سراپا احتجاج، ذمہ داروں کیخلاف کاروائی کا مطالبہ۔ چونیاں کی خاتون حمیداں بی بی کو تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال چونیاں لایا گیا۔ جہاں ڈاکٹر نے خون لگانے کا کہا۔ خاتون کا بلڈ گروپ ہسپتال میں چیک کیا گیا۔ لیبارٹری رپورٹ میں خون کا گروپ بی پوزیٹو بتایا گیا۔ اس گروپ کا خون لگایا گیا تو اس سے مریضہ کی حالت مزید بگڑ گئی۔ اسے تشویشناک حالت میں جناح ہسپتال لاہور ریفر کردیا گیا۔ جہاں پر پتہ چلا کہ اس کا خون گروپ او پوزیٹو تھا تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال چونیاں میں اس کا خون گروپ بی پوزیٹو غلط تشخیص کیا گیا۔ غلط خون گروپ سے مریضہ کو غلط خون لگایا گیا۔ چند دن موت و حیات کی کشمکش میں رہنے کے بعد خاتون اللہ کو پیاری ہو گئی۔ ورثاء نے شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب، وزیر صحت، ڈی سی قصور سے مطالبہ کیا کہ خون کا غلط گروپ تشخیص کرنے والوں اور مریضہ کے علاج میں مجرمانہ غفلت برتنے والوں کیخلاف کاروائی کی جائے تاکہ آئندہ کسی کی بھی جان اس طرح مجرمانہ غفلت کی نذر نہ ہو۔