پانامہ کیس میں عدالت عظمیٰ کے ساتھ ہیں، نواز شریف کے استعفیٰ کا مطالبہ نہیں کرتے: میاں افتخار

29 مئی 2017

اسلام آباد(آن لائن) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ پانامہ کیس میں عدالت نے کسی کو تاحال مجرم نہیں ٹھہرایا، نہ ہی اس کیس پر سپریم کورٹ کا کوئی حتمی فیصلہ آیا ہے، عدالت کے حکم پر تحقیقات کیلئے جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم تشکیل دی گئی ہے جس کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد ہی صورتحال واضح ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پانامہ کیس میں ہم نوازشریف کے بجائے عدالت عظمیٰ کے ساتھ ہیں، نیز نہ ہم وزیراعظم میاں نوازشریف سے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہیں نہ ہی انکے استعفیٰ کیلئے چلائی ہوئی کسی تحریک کا حصہ بنیں گے، البتہ اگر جے آئی ٹی کی رپورٹ کے بعد سپریم کورٹ استعفیٰ کا حکم دیتی ہے تو ہم اسے تسلیم کریں گے۔ اپنے ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا سیاسی جماعتیں اصولوں کی بنیاد پر اختلاف کرتی ہیں اور کبھی کوئی غیر جمہوری راستہ نہیں اپناتیں، لیکن تحریک انصاف نے تو مسلم لیگ (ن) کو ایک روز بھی سکون سے حکومت کرنے نہیں دی، 4حلقوں کیلئے پوری حکومت کو یرغمال بنائے رکھا۔ عمران خان آئے روز ہی سرکاری اداروں پر دباؤ ڈال رہے ہیں لیکن وہ اپنے مقاصد میں کامیاب نہیں ہوسکے۔