جسٹس طارق مسعود پر حملہ کا الزام پیر نقیب الرحمن کے صاحبزادے 5 مریدوں سمیت گرفتار

29 مئی 2017

کلر سیداں (اکرام الحق قریشی )سپریم کورٹ کے جج جناب جسٹس سردار طارق مسعود خان پر حملہ کے الزام میں دربار عالیہ عید گاہ شریف کے پیر نقیب الرحمان کے صاحبزادے حسان حسیب الرحمان پانچ مریدین کے ہمراہ گرفتار ،عدالت نے بیس روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔تفصیلات کے مطابق جسٹس سردار طارق مسعود عدالت کے باہر پولیس اسکوارڈ ساتھ نہیں رکھتے تھے وہ گزشتہ شب اپنی فیملی کے ہمراہ موٹروے کے راستے لاہور سے راولپنڈی آرہے تھے کہ سکھیکی کے قریب عید گاہ شریف کے صاحبزادہ حسان حسیب الرحمان اور دیگر نے ان کی گاڑی کا راستہ روکا اور ان کی گاڑی کو نقصان پہنچایا ۔جسٹس طارق مسعود نے اعلیٰ پولیس حکام سے رابطہ قائم کیا جس کے فوری بعد موٹروے پولیس نے موقع پر پہنچ کر صاحبزادہ حسان حسیب الرحمان اور ان کے دیگر پانچ مریدین کو گرفتار کر کے اپنی مدعیت میں کالے کی منڈی تھانے میں مقدمہ درج کر کے ملزمان کو انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں جج خالد بشیر نے ملزمان کو بیس روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔اس موقع پر عدالت نے پراسیکیوٹر کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے مقدمے میںاقدام قتل کی دفعہ324ت پ بھی شامل کر لی۔