رمضان المبارک میں کے الیکٹرک شہریوں کیلئے عذاب بن گئی ، جماعت اسلامی

29 مئی 2017

کراچی (نیوز رپورٹر) جماعت اسلامی نے کے الیکٹرک کے خلاف سندھ ہائی کورٹ میں کراچی کے عوام کی جانب سے فریق (انٹر وینر )بننے کے حوالے سے تیاریاں مکمل کر لی ہیں اور پیر 29مئی کو امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن سندھ ہائی کورٹ میں درخواست جمع کرائیں گے اور عدالت عالیہ کے روبرو پیش ہوں گے ۔دریں اثناء حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ تمام تر دعوؤں کے باوجود پہلے روزے کی سحری میں شہر کے بہت سے مقامات پر لوڈ شیڈنگ کے باعث کے الیکٹرک کراچی کے شہریوں کے لیے عذاب بن چکی ہے ،جماعت اسلامی کراچی کے عوام کے حق کے لیے کے الیکٹرک کے خلاف ہر قانونی ،آئینی اور جمہوری طریقہ اختیار کر ے گی اور عوام کو کے الیکٹرک کی لوٹ مار اور ظلم و زیادتیوں کے حوالے سے نجات کی جنگ ہر سطح پر جاری رکھے گی ۔کے الیکٹرک کو ہر گز بھاگنے نہیں دیا جائے گا اور کے الیکٹرک کے تحفظ اور بھاگنے کا موقع دینے کی ہر کوشش کی مزاحمت کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ کے الیکٹرک نے کراچی کے شہریو ں سے فیول ایڈجسٹنٹ کے نام پر 62ارب روپے، ناجائز میٹر رینٹ اور ڈبل بنک چارجز کے ذریعے 24ارب روپے، کلاء بیک کے 17ارب روپے اور اضافی ملازمین کے نام پر 15پیسے فی یونٹ کے حساب سے 35ارب روپے وصول کیے ہیں۔ اصولی اورقانونی طور پر یہ کراچی کے عوام کا حق ہے اور یہ اربوں روپے عوام کو واپس ملنے چاہیئے ۔امیرجماعت اسلامی سندھ ڈاکٹرمعراج الہدیٰ صدیقی نے کہا ہے کہ رمضان شریف کی پہلی تراویح اورسحری کے دوران ہی کراچی سمیت سندھ میں بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ نے تمام حکومتی دعووں کے جھوٹا ثابت کردیا ہے، سحروافطارمیں لوڈشیڈنگ کے تمام تردعوئوں کے باجود روزانہ بیس گھنٹے لوڈشیڈنگ عوام کے ساتھ ظلم ہے۔صوبائی امیرنے زوردیاکہ حکومت ماہ صیام میں مہنگائی کے ساتھ بجلی کی لوڈشیڈنگ کے بے قابو جن کو بوتل میں بند کرنے کے لیے سنجیدہ اورکرپشن فری اقدامات کئے جائیں۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...