بے حسی

29 مارچ 2010
مکرمی! مورخہ 20 مارچ 2010ءکو پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ پولیٹیکل سائنس کے زیر انتظام ایک تفریحی دورہ ترتیب دیا گیا۔ اس دورے کی سربراہی دو اساتذہ کر رہے تھے۔ تقریباً 40 لڑکیاں اور 15 لڑکے ان کے ہمراہ تھے۔ ہیڈ بلوکی کے بعد چھانگا مانگا پہنچ کر قریباً 3:45 کے قریب دونوں اساتذہ نے اچانک اطلاع دی کہ طلباءو طالبات بس کی جانب واپس آ جائیں۔ دونوں اساتذہ کو اس سے آگاہ کیا گیا کہ لنچ کی بکنگ کرائی جا چکی ہے۔ لیکن اساتذہ کے رویے میں سختی آتی گئی۔ اور بالآخر طلباءو طالبات کو چھانگا مانگا کے جنگل میں بے یارومددگار چھوڑ آئے۔ اس مقام پر طلباءو طالبات کے پاس واپسی کی کوئی سبیل موجود نہ تھی سرتوڑ جدوجہد کے بعد ٹرانسپورٹ کا بندوبست کیا گیا اور چند سکیورٹی گارڈز وغیرہ کا بھی بندوبست کیا گیا تاکہ حفاظت کے ساتھ واپس پہنچا جا سکے۔ طلباءو طالبات اور ان کے والدین اور دوران مسلسل اندیشوں کا شکار رہے۔ آخر کار ہم 9-45 پر واپسی یونیورسٹی پہنچے۔ انتظامیہ سے درخواست ہے کہ پریشانی کا باعث بننے والوں سے جواب طلبی کی جائے۔ (والدین طالبات اور طلباء شعبہ سیاسیات پنجاب یونیورسٹی لاہور)

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...