A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

بدترین لوڈشیڈنگ جاری‘ راولا کوٹ میں دوسرے روز بھی شٹر ڈاﺅن‘ مظاہرے‘ لاٹھی چارج‘ متعدد زخمی

29 مارچ 2010
لاہور + حافظ آباد+ نارنگ منڈی (نیوز رپورٹر + نامہ نگاران + نمائندہ نوائے وقت) لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 20 گھنٹے ہونے سے شہری بے حال ہوگئے۔ کاروبار ٹھپ اور سینکڑوں مزدور بیروزگار ہو گئے جس سے ان کے گھروں کے چولہے سرد پڑ گئے۔ مچھروں اور گرمی کے ستائے شہری راتیں جاگ کر گزارنے لگے مچھروں کے کاٹنے سے درجنوں شہری ملیریا میں مبتلا ہوگئے۔ بے آرامی کی وجہ سے ذہنی اور نفسیاتی امراض بڑھنے لگے۔ میٹرک کے طلباءکی امتحان کی تیاری متاثر ہونے لگی۔ لوڈشیڈنگ نے چھٹی کے روز بھی عوام کو ساکھ کا سانس نہ لینے دیا۔ بار بار کی ٹرپنگ سے شہریوں کی لاکھوں روپے مالیت کی الیکٹرونکس اشیاءجل گئیں جبکہ راولاکوٹ میں دوسرے وز بھی سینکڑوں افراد نے مظاہرے کئے‘ ٹائر جلائے اور حکومت کیخلاف نعرے لگائے۔ پولیس نے مظاہرین پر لاٹھی چارج کیا جس سے متعددافراد زخمی ہو گئے۔ آزاد کشمیر میں پی سی ایس کے امتحانات 5اپریل تک ملتوی کر دئیے گئے۔ راولا کوٹ میں دوسرے روز بھی شٹرڈاﺅن اور پہیہ جام ہڑتال کی گئی۔ بعض علاقوں میں مظاہرین نے گاڑیوں پر پتھراﺅ بھی کیا۔ چناب نگر، نارنگ منڈی سمیت دیگر شہروں میں شہریوں نے واپڈا کےخلاف مظاہرے کئے جبکہ پانی کا بحران بھی شدت اختیار کرنے لگا ہے۔ راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ لوڈشیڈنگ میں اضافہ قبل از وقت گرمی شروع ہونے سے ہے۔ شہریوں نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے بجلی کی قیمت میں اضافہ کر کے عوام پر ڈرون حملہ کیا ہے۔ بجلی کے نظام میں 4750 میگاواٹ خسارہ پہنچ چکا ہے۔ لاہور میںگزشتہ روز بجلی 8 آٹھ گھنٹے تک غائب رہی جس کی وجہ سے شہریوں کی چھٹی کا دن غارت ہو کر رہ گیا ۔ اسلام آباد میں قائم ریجنل سنٹر کی جانب سے فورسڈ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے انفرادی فیڈرزبند کرنے کی بجائے 10گرڈ سٹیشن بند کئے جارہے ہیں۔ مختلف علاقوں میں واسا اور زرعی ٹیوب ویلوں کی بندش سے گھریلو اور زرعی صارفین کو پانی کی سپلائی کا نظام بری طرح متاثر ہوا۔ متعدد علاقوں میں شہریوں کو پانی کے حصول میں بڑی دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔ نارنگ منڈی میں لوڈشیڈنگ کےخلاف اے ٹی آئی اور مسلم لیگی کارکنوں نے پریس کلب کے باہر مظاہرہ کیا۔ میاں عطاءاللہ بخاری، باﺅ غلام شبیر اور دیگر نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی نااہلی کی وجہ سے لوڈشیڈنگ کا بحران شدت اختیار کرتا جارہا ہے۔ حافظ آباد اور اسکے گردونواح میں طویل لوڈشیڈنگ سے کاروبار شدید متاثر ہوکر رہ گیا ہے جبکہ کاٹن یاور لومز فیکٹریوں پر کام کرنے والے سینکڑوں مزدوروں کے چولہے ٹھنڈے ہو گئے ہیں۔