علیحدگی پسندوں کے حملوں میں 40 فیصد پٹڑیاں تباہ ہو چکی ہیں : بھارتی وزیر ریلوے

29 مارچ 2010
نئی دہلی (اے پی پی) بھارت کی وزیر ریلوے ممتا بینرجی نے کہا ہے کہ نکسل علیحدگی پسندوں کی تخریبی سرگرمیوں کے باعث ریلوے کی 40 فیصد پٹڑیاں تباہ ہو چکی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے یوان بالا (راجیہ سبھا) میں ایک رپورٹ پیش کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ علیحدگی پسندوں نے اب کھلم کھلا ریلوے پٹڑیوں پر حملے شروع کر دیئے ہیں جس کے باعث قومی ریلوے کو بہت بڑے مالیاتی خسارے کا سامنا ہے۔ ممتا بینرجی نے بتایا کہ انڈین ریلوے ڈھانچہ 60 ہزار کلومیٹر پر مشتمل ہے، بدقسمتی سے اس کا بہت بڑا حصہ شورش زدہ صوبوں میں واقع ہے جہاں نکسل علیحدگی پسندوں کا زور ہے۔ انہوں نے کہا کہ علیحدگی پسندوں کی یہ تحریک زور و شور سے بڑھ رہی ہے جبکہ 28 میں سے 14 ریاستوں میں اس کی قوت تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ یاد رہے کہ گذشتہ دنوں ہندوستان کے وزیراعظم من موہن سنگھ نے تسلیم کیا تھا کہ ہمارا سب سے بڑا اندرونی سکیورٹی مسئلہ نکسل علیحدگی پسندوں کی تحریک ہے جو کہ تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ ادھر اڑیسہ میں ماﺅ نواز علیحدگی پسندوں نے وزیراعلی ہاﺅس کو دھماکہ خیز مواد سے اڑھانے کی دھمکی دےدی۔ بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق ریاست اڑیسہ کے وزیراعلی ناوین پٹائک کے دفتر کو ماﺅ نواز علیحدگی پسندوں کی جانب سے ایک ای میل ارسال کی گئی جس میں انہوں نے وزیراعلی کو خبردار کیا ہے کہ اگر انہوں نے ریاست میں پیرا ملٹری فورس تعینات کی اور مشترکہ آپریشن گور گرین ہنٹ شروع کیا تو آپریشن شروع ہوتے ہی ماﺅ نواز علیحدگی پسند وزیراعلی ہاﺅس اور دیگر سرکاری تنصیبات کو نشانہ بنا کر انہیں دھماکہ خیز مواد سے اڑا دیں گے۔ انہوں نے ای میل میں یہ بھی دھمکی دی ہے کہ ماﺅ نواز علیحدگی پسند اپنے سربراہ کو لگنے والی ہر گولی کا بدلہ لے کر جواب دیں گے۔