امرتسر میں رینجرز اور بی ایس ایف کے درمیان ششماہی مذاکرات شروع

29 مارچ 2010
لاہور/ امرتسر (خبرنگار+ اے پی پی+ آن لائن) پاکستان رینجرز اور بی ایس ایف کے درمیان تین روزہ ششماہی مذاکرات اتوار کو بھارتی پنجاب کے شہر امرتسر میں شروع ہو گئے۔ پاکستانی وفد کی قیادت ڈی جی رینجرز (پنجاب) میجر جنرل یعقوب خان جبکہ بھارتی وفد کی بی ایس ایف کے سپیشل ڈائریکٹر پی پی ایس سندھو کر رہے ہیں۔ بھارت پہنچنے پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے میجر جنرل محمد یعقوب نے کہاکہ ہماری سرحدوں کی مﺅثر حفاظت کی جا رہی ہے اور ان کی نگرانی بھی ہو رہی ہے اور بھارت کی جانب سے خار دار تار بھی ہے جس سے دراندازی مشکل ہے ایسے حالات میں کون کیسے اندازہ لگا سکتا ہے کہ پاکستان کی طرف سے دراندازی ہو رہی ہے۔ قبل ازیں پاکستان رینجرز کا 15 رکنی وفد ڈائریکٹر جنرل رینجرز (پنجاب) میجر جنرل یعقوب خان کی سربراہی میں ششماہی مذاکرات میں شرکت کیلئے گزشتہ روز واہگہ بارڈر سے بھارت پہنچا۔ وفد میں انٹی نارکوٹکس فورس‘ سروے آف پاکستان کے افسران بھی شامل ہیں۔ وفد امرتسر میں سہ روزہ مذاکرات میں شرکت کے بعد 30 مارچ کی شام واپس آئے گا۔ رینجرز ذرائع کے مطابق مذاکرات میں غلطی سے سرحد کے قریب چلے جانیوالے بے گناہ پاکستانیوں کی بھارتی بارڈر سکیورٹی فورس کے ہاتھوں ہلاکت‘ سرحدوں پر غیر قانونی دفاعی تعمیرات‘ بلاجواز اور بلااشتعال فائرنگ اور سیز فائر کی خلاف ورزی‘ بھارتی طیاروں اور ہیلی کاپٹروں کی طرف سے سرحدی خلاف ورزی‘ بھارتی بارڈر سکیورٹی فورس کی طر ف سے غیر قانونی طور پر سرحد عبور کرنیوالوں اور سمگلروں کی معاونت‘ بھارتی جیلوں میں طویل عرصہ سے جرم بے گناہی کی سزا کاٹنے والے بے گناہ پاکستانیوں کی رہائی اور وطن واپسی کے علاوہ دیگر مسائل پر بات کی جائے گی۔ ملاقات میں بھارت سے ہیروئن کی تیاری میں استعمال ہونیوالے کیمیکل اور ہیروئن کی سمگلنگ کو روکنے پر بھی بات ہو گی۔