آٹھ ہزار امیر ترین پاکستانیوں پر ٹیکس لگاکر مہنگائی کم کی جا سکتی ہے

29 مارچ 2010
لاہور (وقت نیوز رپورٹ) سیاسی جماعتوں کے اندر اکانومی ونگ نہ ہونے کی وجہ سے ملک کے اصل سیاست دان بھی مہنگائی کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہو گئے ہیں۔ 6بڑے ادارے پی آئی اے‘ واپڈا‘ ٹی سی پی‘ ریلوے سمیت 2دیگر 250ارب روپے کا سالانہ نقصان کر رہے ہیں ‘ بڑے بڑے مینوفیکچررز فیکٹری مالکان پول کرکے مصنوعی مہنگائی کر رہے ہیں‘ جب تک 8ہزار امیرترین پاکستانیوں پر ٹیکس نہ لگایا گیا اس وقت تک مہنگائی کم نہیں ہو گی۔ ان خیالات کا اظہار کراچی چیمبر آف کامرس کے صدر قیصر شیخ‘ سویرا گروپ کے ڈائریکٹر مردان زیدی اور لاہور چیمبر آف کامرس کے رکن یوسف شاہ نے وقت نیوز کے پروگرام ’ان بزنس“ میں کیا۔ میزبان ندیم بسرا تھے۔ پروڈیوسر شاہد ندیم ایسوسی ایٹ پروڈیوسر وقار قریشی تھے۔ قیصر شیخ کا کہنا تھا کہ پاکستان دنیا کے ان 15ممالک میں ہے جہاں مہنگائی سب سے زیادہ ہے۔ حکومتی اخراجات زیادہ ہیں صرف 8فیصد لوگ ٹیکس دیتے ہیں امرا پر ٹیکس نہیں لگتا۔ 1ہزار ارب روپے عوام کا 6بڑے اداروں پر لگا ہے وہ 250ارب روپے سالانہ نقصان میں ہیں‘ دہشت گردی کی وجہ سے معاشی خسارہ بڑھا ہے اور مہنگائی بڑھی ہے۔