پاکستان ایران کے ساتھ مشترکہ فلمسازی کریگا: سنگیتا

29 مارچ 2010
لاہور (کلچرل رپورٹر) پاکستان ایران کے ساتھ مشترکہ فلمسازی کرے گا۔ پاکستانی فلمساز ڈائریکٹر اپنی فلموں کا پوسٹ پروڈکشن کا کام بھارت یا بنکاک کی بجائے ایران سے کروائیں گے ایران میں فلموں کی عکسبندی بھی ہوگی اور وہاں پر پاکستانی فلمیں بھی ریلیز کی جائیں گی۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان فلم فیڈریشن کی چیئرپرسن سنگیتا نے ڈائریکٹر جنرل خانہ فرہنگ ایران لاہورڈاکٹر عباس فاموری، خانم ڈاکٹر فاموری کے اعزاز میں فلم فیڈریشن کی طرف سے مقامی ہوٹل میں دیئے گئے ایک عشائیے میں کیا۔ اس موقع پر آغا زاہد علی، راحیل باری، پرویز رانا، خرم باری، اچھی خان، معمر رانا، عجیب گل اور محمد اسلم گڑا بھی موجود تھے سنگیتا نے کہا کہ ڈی جی خانہ فرہنگ ایران کی طرف سے ہمیں ایران کے دورے کی دعوت مل چکی ہے فلمی وفد اگلے ماہ کے آخر میں ایران جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پہلے بھی کہہ چکی ہوں اب بھی کر رہی ہوں کہ فلم انڈسٹری کی بحالی کیلئے مجھے حکومتی وعدوں پر دس فیصد اعتماد کیا۔ اس لئے بہتر یہ ہے کہ ہم اپنے طور پر فلم انڈسٹری کی بحالی کے لئے جو کچھ کر سکتے ہیں وہ کریں ایران ہمارا برادر اسلامی ملک ہے بھارت کے ساتھ فلمی تعاون کی بجائے ہمیں ایران کے ساتھ فلمی شعبے میں تعاون کرنا چاہئے اور ہم نے اپنے طور پر ایران کے ساتھ فلمی شعبے میں تعاون شروع کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فلم فیڈریشن نے باری سٹوڈیو میں فری ڈسپنسری بھی قائم کی ہے جس کا افتتاح یکم اپریل کو ہو رہا ہے اس ویژن میں صبح اور شام کے وقت ڈاکٹر بیٹھ کر غریب کارکنوں کا مفت علاج کریں گے۔