طیارے کی تباہی ملکی تاریخ کا بدترین حادثہ ہے‘ حکومت اعلی سطح پر تحقیقات کرے

29 جولائی 2010
لاہور ( خبر نگار+خصوصی نامہ نگار+ سٹاف رپورٹر+ لیڈی رپورٹر) اسلام آباد میں طیارے کے حادثے پر مختلف سیاسی و سماجی شخصیات نے گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔ سپیکر پنجاب اسمبلی رانا محمد اقبال، سینئر وزیر راجہ ریاض احمد، صوبائی وزیر ایکسائز میاں مجتبیٰ الرحمن، پیپلزپارٹی شعبہ خواتین کی صدر بیلم حسین، وزیراعلیٰ پنجاب کی مشیر بیگم ذکیہ شاہ نواز، مسلم لیگ (ق) شعبہ خواتین کی صدر شاہانہ فاروقی نے واقعہ پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے مرحومین کے لےے دعائے مغفرت اور ان کے لواحقین سے اظہار تعزیت کیا ہے۔ متحدہ جمعیت اہلحدیث کے سید ضیاءاللہ شاہ بخاری، مولانا محمد نعیم بادشاہ، امیر جماعت اسلامی امیر العظیم، جمعیت علمائے اسلام کے رہنما پیر اعجاز ہاشمی، علامہ قاری محمد زوار بہادر، پیپلزپارٹی کے رہنما سمیع اللہ خان، ڈاکٹر فخرالدین اورنگزیب، نوید چودھری، چودھری اصغر گجر، جامعہ اشرفیہ لاہور کے علماءمولانا محمد عبید اللہ، حافظ فضل الرحمن، اسعد عبید، مولانا مجیب الرحمن انقلابی، مرکزی جمعیت اہلحدیث کے امیر سنیٹر پروفیسر ساجد میر اور ناظم اعلی ٰ حافظ عبدالکریم، مجلس قائداعظم کے عہدیداروں ڈاکٹر سجاد حیدر، میجر جنرل (ر) مظفر حسین، ڈاکٹر احسان الٰہی ظفر، سید ندیم الحسن شاہ، سعید گیلانی، نعیم گیلانی، امیر جماعت اسلامی پنجاب، ڈاکٹر وسیم اختر، دارالعلوم انوار مصطفی کوٹ لکھپت کے مہتمم قاری اللہ بخش، پیپلزپارٹی پنجاب کے قائم مقام صدر سمیع اللہ خان نے مسلم لیگ (ن) کے ایم پی اے اصغر علی منڈا نے گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے اعلی ٰ سطح کی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جاں بحق ہونے والے مسافروں کے لواحقین کی مالی امداد کا اعلان کیا جائے اور حکومت پرانے طیاروں کی مرکت کو ترک کرکے انہیں گراﺅنڈ کرنے کے احکامات جاری کرے صرف نئے طیاروں کو اڑنے کی اجازت دی جائے اور ایسے پائلٹس جو ریٹائرڈ ہو چکے ہوں انہیں پرواز لیجانے کی اجازت نہ دی جائے، کمپنیاں پائلٹوں سے کئی گھنٹے کام لیتی ہیں اس سلسلے کو بھی روکا جائے۔