امریکی دباﺅ پر جنوبی پنجاب اور شمالی وزیرستان میں آپریشن خطرناک ہو گا: منور حسن

29 جولائی 2010
لاہور (خصوصی نامہ نگار + جی این آئی + ثناءنیوز) جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سید منور حسن نے کہا ہے کہ امریکہ کے دباﺅ پر اگر جنوبی پنجاب اور شمالی وزیرستان میں فوجی آپریشن شروع کیا گیا تو اس کے سنگین نتائج سامنے آئیں گے۔ بھارت کی آبی جارحیت کے باعث پانی کا مسئلہ پیدا ہوا ہے جبکہ پاکستانی وزیرخارجہ بھارتی وکالت کرتے ہوئے اسے صوبوں کے درمیان جھگڑا قراردے رہے ہیں۔ بھارت نے بین الاقوامی معاہدوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ہمارے حصے کے دریاﺅں پر 62 ڈیم بنا کر ہمارا پانی روک رکھا ہے‘ پاکستان افغانستان ٹرانزٹ ٹریڈ معاہدہ امریکہ کے دباﺅ پر کیا گیا۔ مجلس عمل کو دوبارہ فعال کرنے میں بڑی رکاوٹ مولانا فضل الرحمان ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز منصورہ میں کسان بورڈ کے زیر اہتمام کنونشن سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو میں کیا۔ سید منور حسن نے مزید کہا کہ ہلیری کلنٹن نے پاک افغان ٹرانزٹ معاہدہ اپنی موجودگی میں کروایا امریکہ پاکستان کی معیشت تباہ کرنے کیلئے یہاں بھارت کی اقتصادی اجارہ داری قائم کرنا چاہتا ہے۔ سرگودھا میں رکن صوبائی اسمبلی کی ضمنی انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کی شکست چھوٹا سا ٹریلر ہے آئندہ عام انتخابات میں اصل فلم چلے گی۔ سید منور حسن نے مزید کہا کہ بھارت سے مذاکرات میں اصل ایشو پر بات نہیں کی جاتی‘ مسئلہ کشمیر اور بھارت کی آبی جارحیت بنیادی مسائل ہیں جبکہ پاکستانی حکمران بھارت کی بلوچستان میں دہشتگردی کی کارروائیوں پر احتجاج کرنے کے بجائے ممبئی حملوں کے مجرموں کو سزا دینے کی یقین دہانیاں کرانے میں مصروف رہتے ہیں۔ بھارت بلوچستان میں روپیہ اور اسلحہ تقسیم کر رہا ہے۔ اس کو بے نقاب کرنا چاہئے۔ سید منور حسن نے کہا کہ بلوچستان کے بعد اب کئی روز سے کراچی میں ٹارگٹ کلنگ ہو رہی ہے حکومت میں شامل ایم کیو ایم اور جے یو آئی ایک دوسرے کو ذمہ دار ٹھہرا رہی ہیں اور بالکل سچ بول رہی ہیں‘ 12 مئی اور 14 مئی کے سانحات کی تحقیقات اور مجرموں کو سزا دئیے بغیر کراچی کا امن بحال نہیں ہو سکتا۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے اندر دہشتگردی فوجی آپریشنوں کا ردعمل ہے‘ شمالی وزیرستان اور جنوبی پنجاب میں آپریشن کیا گیا تو عوام میں نفرت پیدا ہو گی۔

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...