لاہور کی ماتحت عدالتوں میں ہڑتال جاری‘ وکلاء اور بعض ججوں میں تلخ کلامی

29 جولائی 2010
لاہور (اپنے نامہ نگار سے) لاہور بار ایسوسی ایشن کی کال پر ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج زوار احمد کے تبادلے کےلئے گزشتہ روز بھی ساڑھے دس بجے کے بعد ماتحت عدالتوں میں وکلاءنے ہڑتال کی۔ لاہور بار کی عاملہ کے ارکان اور دیگر وکلاءساڑھے دس بجے کے بعدان عدالتوں میں گئے جہاں بعض وکلاءکے پیش ہونے کی اطلاع ملی تھی۔ ماتحت عدالتوں میں کئی گھنٹے تک بلی چوہے کا کھیل جاری رہا۔وکلاءکے عدالتوں میں جانے پر بیشتر جج صاحبان نے عدالتی امور نمٹانا بند کر دیئے۔ کچھ جج صاحبان کا کہنا تھا کہ اگر وکلاءعدالتوں میں پیش ہوتے رہے تو وہ مقدمات کی سماعت ضرور کریں گے جس پر وکلاءاور بعض ججوں کے درمیان معمولی تلخ کلامی بھی ہوئی۔ججز کا کہنا تھا کہ ان کو ہائی کورٹ کی طرف سے عدالتی امور نمٹانے اور مقدمات کی سماعت کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ کچھ عدالتوں میں وکلاءنے پیش ہونے کی کوشش کی مگر لاہور بار کے نمائندوں کی درخواست پر وہ اگلی تاریخیں لے کر چلے گئے۔ ہڑتال کے باعث ماتحت عدالتوں میں ہزاروں مقدمات کی سماعت متاثر ہوئی اور سائلین کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ بعض وکلاءاور سائلین نے نہایت مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آئے روز کی ہڑتال نے سائلین کےلئے حصول انصاف ناممکن بنا دیا ہے۔ لاہور بار کے سیکرٹری محمد قاسم بٹر نے رابطے پر کہا کہ وکلاءکا احتجاج سیشن جج کے تبادلے تک جاری رہے گا۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...