سینٹ کا اجلاس طیارہ حادثہ کے سوگ میں ملتوی‘ جاں بحق افراد کیلئے فاتحہ خوانی

29 جولائی 2010
اسلام آباد (ثناءنیوز) سینٹ کا اجلاس بدھ کو نجی فضائی کمپنی کے مسافر طیارے کی خوفناک تباہی اور قیمتی جانوں کے ضیاع کے سوگ میں ملتوی کر دیا گیا۔ ایوان میں جاں بحق افراد کے لئے فاتحہ خوانی کی گئی جبکہ چیئر مین سینٹ فاروق ایچ نائیک نے رولنگ دی ہے کہ جاں بحق مسافروں کے لواحقین کو مناسب معاوضہ دیا جائے اور غمزدہ خاندانوں کی امداد میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔ ارکان نے حادثے کی تحقیقات منظر عام پر لانے کا مطالبہ کیا۔ اجلاس گزشتہ روز چیئر مین فاروق ایچ نائیک کی صدارت میں۔ سینٹ مسافر طیارے کے حادثے سے غمزدہ خاندانوں کے ساتھ دکھ افسوس اور ہمدردی کا اظہار کیا‘ طاہر مشہدی، احمد علی، بابر غوری ،سینیٹر عبدالغفور حیدری، جمال لغاری نے کہا کہ سانحے پر پوری قوم غم میں ڈوبی ہوئی ہے۔ قومی تاریخ کا بہت بڑا سانحہ ہے۔ ارکان نے کہا کہ اسلام آباد ایئر پورٹ پر لواحقین کا جم غفیر تھا مگر راہنمائی کے لئے کوئی انتظام موجود نہیں تھا۔ ارکان نے مطالبہ کیا کہ لواحقین کو معاوضہ دیا جائے‘ میتیں لواحقین کے سپرد کی جائیں۔ جمال لغاری نے کہا کہ چند سال قبل ملتان میں بھی اس قسم کا واقعہ ہوا تھا۔ مگر تحقیقات سے قوم کو آگاہ نہیں کیا گیا۔ نیئر حسین بخاری نے کہا کہ لواحقین کی ہر ممکن امداد کی جائے گی۔ طاہر مشہدی نے مطالبہ کیا کہ ایوان بالا قرار داد منظور کرے کہ حادثے کی صاف شفاف تحقیقات کی جائیں قوم حقائق جاننا چاہتی ہے۔ مولانا عبدالغفور حیدری نے جاں بحق ہو نے والوں کی روح کے ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی کرائی۔ وفاقی وزیر بابر غوری نے مطالبہ کیا کہ یہ بھی پتہ لگایا جائے کہ حادثہ کپتان کی غلطی کی وجہ سے ہوا یا سول ایوی ایشن اس کی ذمہ دارہے۔ اعلیٰ سطح پر تحقیقات ضروری ہے۔