5 افراد زخمی ہوئے: کوئی نہیں بچا‘ رحمن ملک کی تضاد بیانی

29 جولائی 2010
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر داخلہ رحمٰن ملک نے پہلے میڈیا کو خبر دی کہ طیارے کے حادثے میں 5افراد زندہ بچ گئے ہیں جنہیں زخمی حالت میں ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے تاہم بعد ازاں انہوں نے بتایا کہ تمام 152افراد جاں بحق ہوگئے ہیں اور کسی کے زندہ بچ جانے کی کوئی اطلاع نہیں۔ اس پر شہریوں نے حیرانی اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اتنا افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے اور ملک کے وزیر داخلہ کا طرز عمل انتہائی غیر سنجیدہ ہے۔ شہریوں کا کہنا تھا کہ لگتا ہے دہشت گردی خلاف جنگ میں بھی ان کو ملنے والی معلومات کا یہی عالم ہے۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے رحمن ملک نے کہا کہ سول ایوی ایشن کے حکام حادثے کی تحقیقات کریں گے۔ 100 نعشیں نکال لی گئی ہیں طیارے کا راستہ تبدیل کرنے کی بھی تحقیقات کی جائیں گی۔ جب طیارے کو لینڈنگ کی اجازت ملی وہ 2500 فٹ کی بلندی پر پرواز کر رہا تھا تاہم لینڈنگ کی اجازت نہ ملنے کے بعد طیارہ تین ہزار فٹ کی بلندی پر چلا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ طیارے کے حادثے میں تخریب کاری کا امکان بھی نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔