رمضان المبارک میں قیمتیں کنٹرول کرنے کا کوئی نظام نہیں: سرکاری افسر

29 جولائی 2010
لاہور( وقائع نگار) صوبے بھر میں روزمرہ استعمال کی اشیاءکی قیمتوں کو کنٹرول کرنے اور ذخیرہ اندوزوں کو قانون کی گرفت میں لانے کیلئے ضرورت کے مطابق عملہ اور وسائل موجود نہیں ہیں۔ ایک اعلیٰ سرکاری افسرنے نوائے وقت سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جو یہ کہتا ہے کہ ماہ رمضان المبارک میں چینی، آٹا اور دیگر اشیاءکی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کے انتظامات مکمل کر لئے گئے وہ احمقوں کی دنیا میں رہتا ہے۔ اس افسر کے مطابق صوبے بھر میں کوئی ایسا نظام ہی موجود نہیں ہے حکمران لوگوں کو خوش کرنے کیلئے صرف بیان بازی کرتے ہیں۔ اس افسر نے کہا کہ یہ بات بہت افسوسناک ہے کہ لوگوں کے ووٹوں پر حکومتوں میں آنے والے لوگ اپنے ہی ووٹرز کودھوکے دیتے ہیں مجسٹریٹی نظام بھی اس لئے دوبارہ شروع نہیں کیا گیا کہ غلط کام کرنے والے پکڑے جائیں گے ۔ماہ رمضان سے قبل بھی کئی اشیاءکی مصنوعی قلت پیدا کرکے ان کے ریٹ بڑھانے کا فیصلہ کیا چکا ہے اور اس کے لئے ہر شعبے میں موجود مافیا کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...