افغان فورسز کو کئی سال مدد کی ضرورت رہے گی: نکلسن، نئے کمانڈر خطرات سے نمٹنے کی صلاحیت رکھتے ہیں: امریکی وزیر دفاع

29 جنوری 2016
افغان فورسز کو کئی سال مدد کی ضرورت رہے گی: نکلسن، نئے کمانڈر خطرات سے نمٹنے کی صلاحیت رکھتے ہیں: امریکی وزیر دفاع

واشنگٹن (این این آئی + اے پی پی+ اے ایف پی ) افغانستان میں بین الاقوامی فوج کی قیادت کیلئے مقرر نئے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل جان مک نکلسن اب جنگ زدہ ملک میں امریکی اور نیٹو فوج کی کمان سنبھالیں گے، میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی سینٹ سے اپنے تقرر کی توثیق کے بعد وہ جنرل جان کیمبل کی جگہ لیں گے۔امریکی وزیردفاع آشٹن کارٹر نے ایک بیان میں کہا کہ وہ مختصر سریع الحرکت فورس کی قیادت کا مطلب جانتے ہیں اور یہ بھی کہ ہمارے شراکت داروں کی فوری اور طویل الیمعاد خطرات سے نمٹنے کے لیے کیسے صلاحیت کار کو بہتر بنایا جاسکتا ہے۔ پنٹاگون کے پریس سیکرٹری پیٹر کک نے کہا ہے کہ فور سٹار لیفٹیننٹ جنرل جان ڈبلیو میک نکلسن افغانستان اور دنیا بھر میں مختلف جگہوں پرتعینات رہے۔ اس وقت وہ امریکی فوج کی 82 ویں ائر بورن کمانڈ ڈویژن اور نیٹو الائیڈ لینڈ فورسز کی کمانڈ کر رہے ہیں۔دوسری طرف جان مک نکلسن نے کہا ہے کہ افغان فورسز کو ملکی سکیورٹی صورتحال کو آزادانہ طور پر کنٹرول کرنے کے قابل بنانے میں کئی سال لگیں گے۔ سینئر قانون سازوں سے گفتگو کرتے ہوئے نکلسن نے نئے جنگجوئوں کے طور پر افغان فوجیوں کی تعریف کی تاہم ہمیں خاص طور پر افغان فورسز کو ایوی ایشن کے شعبہ میں ترقی دینے کیلئے کئی سال لگیں گے۔