رائیونڈ: عدالتی حکم کے باوجود 34 دکانیں سربمہر، متاثرین کا ریلوے روڈ پر مظاہرہ

29 جنوری 2016

رائے ونڈ (نامہ نگار) ریلوے پولیس نے عدالتی حکم کے باوجود بیرون تبلیغی مرکز بازار میں رجسٹری و انتقال شدہ ملکیتی34دکانیںگزشتہ رات دوبارہ سربمہر کردیں، تاجروں پر دکانیں کھولنے پر مقدمہ درج کرلیا گیا ۔ متاثرہ دکانداروں نے ریلوے پولیس گردی پر لاہور ریلوے روڈ پر دھرنا دیا اور آئندہ روزنواز شریف فارم کے سامنے احتجاج کا اعلان کیا ہے۔بتایا گیا ہے کہ بیرون تبلیغی مرکز بازار میں دکانداروں کی ملکیتی جگہ پر 32 دکانیں طویل مدت سے قائم ہیں ،کچھ عرصہ قبل محکمہ ریلوے نے سربمہر کرڈالی، بعد ازاں دکان داروں نے ہائی کورٹ سے رجوع کیا مگر اس کے باوجود ریلوے حکام نے دکانیں کھولنے کیلئے تاجروں سے ایک لاکھ روپے بطور سکیورٹی چیک کی صورت میں وصول کیا ۔گزشتہ دنوں ہائی کورٹ میں دائر کیس کی روشنی میں سول جج درجہ اول شاہد علی کھوکھر نے دکانوں کو کھولنے کا حکم دے دیا ،مذکورہ دکانداروں نے عدالتی فیصلہ کی کاپی رائے ونڈ کے متعلقہ ریلوے حکام اے ای این اور ریلوے پولیس چوکی میں جمع کرائی اور دکانیں کھول لی گئیں ۔ چند گھنٹے بعدرات دس بجے ریلوے پولیس کی بھاری نفری نے بیرون تبلیغی مرکز بازار میں شب خون مارکر تمام دکانیں سربمہر کرڈالی ۔