کوئٹہ اور گوادر کو محفوظ شہر بنانے کا منصوبہ، 10 ارب لاگت آئے گی

29 جنوری 2016

کوئٹہ(آن لائن)بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ اور ساحلی شہر گوادر کو 'محفوظ شہر' بنانے کے لیے سکیورٹی کا جامع منصوبہ تشکیل دے دیا گیا۔مذکورہ منصوبے کا تخمینہ 10 ارب روپے لگایا گیا ہے اور اس منصوبے پر عمل درآمد کے لیے صوبائی حکومت پہلے ہی سے 3 ارب روپے کی منظوری دے چکی ہے۔خیال رہے کہ اس منصوبے کی تفصیلات ایک اجلاس کے دوران بتائی گئیں جس کی صدارت بلوچستان کے چیف سیکرٹری سیف اللہ چھٹہ کررہے تھے۔اجلاس کے دوران بریفنگ دیتے ہوئے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ڈائریکٹر جنرل خالد شیر دل کا کہنا تھا کہ دونوں شہروں میں لیزر کیمروں، آٹومیٹک نمبر پلیٹ ریڈر اور آر ایف آئی ڈی سکیورٹی آلات کی تنصیب کے لئے 10 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں۔انھوں نے مزید کہا کہ اس منصوبے پر عمل درآمد کرنے کی غرض سے آلات اور سسٹم کی خریداری کے لیے 3 ارب روپے کی منظوری دی جاچکی ہے۔ڈی جی کا کہنا تھا کہ کوئٹہ کے تمام اہم مقامات پر 1400 سکیورٹی اور نگرانی کیمرے نصب کئے جائیں گے، جس میں شہر کے داخلی اور خارجی راستے بھی شامل ہیں جبکہ گوادر اور اس کے اطراف میں 136 مقامات پر 465 کیمرے نصب کئے جائیں گے۔