شہروں میں 10 گھنٹے تک لوڈشیڈنگ جاری، وزارت پانی و بجلی نے چپ سادھ لی

28 ستمبر 2014

لاہور، گوجرانوالہ (نیوز رپورٹر+ نمائندہ خصوصی) وزارت پانی و بجلی نے بدترین لوڈ شیڈنگ پر مکمل چپ سادھ لی، این ٹی ڈی سی نے شارٹ فال کے اعدادوشمار جاری کرنے کا سلسلہ بھی روک دیا۔ مختلف شہری اور دیہی علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 10 سے 16 گھنٹے رہنے سے عوام کی مشکلات کم نہ ہو سکیں۔ ذرائع کے مطابق آئی پی پیز کو ادائیگیوں میں توازن نہ ہونے کی وجہ سے پیداوار میں کمی بر قرار ہے جسکی وجہ سے شارٹ فال مزید بڑھ گیا ہے۔ گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق گیپکو کی جانب سے صنعتوں کو بجلی کی فراہمی میں دیئے جانے والے ریلیف کے بعدگوجرانوالہ اور گرد و نواح میں کئی دیہاتیوں میں بدترین لوڈشیڈنگ شروع کر دی گئی۔ دیہاتیوں کا کہنا ہے بجلی کے بل باقاعدگی سے دیتے ہیں جبکہ شہرکی نسبت دیہات میں بجلی چوری کا رحجان بھی کم ہے مگر گیپکو حکام اور حکومت کی طرف سے ناروا سلوک ہماری سمجھ سے باہر ہے ہم بھی پاکستان کی شہریت رکھتے ہیں۔علاوہ ازیں لاہور سے نیوز رپورٹر کے مطابق وفاقی سیکرٹری پانی وبجلی نرگس سیٹھی نے اوور بلنگ کی وسیع پیمانے پر سامنے آنے والی شکایات پر سخت برہمی کا اظہار کرتے کہا ہے ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کے سربراہان اس میں ملوث عملے اور افسروں کیخلاف سخت کارروائی عمل میں لائیں۔ نرگس سیٹھی نے لیسکو ہیڈ کوارٹر میں پنجاب کی ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کے سربراہان سمیت پیپکو کے اعلیٰ افسران کے اجلاس کی صدارت کی ۔ نرگس سیٹھی نے مزید کہا غلط ریڈنگ کرنے والے میٹر ریڈرز کیخلاف بھی کارروائی کی جائے۔