دھرنے، سیلاب: روپے کی قدر میں کمی سے بیرونی قرضوں 210 ارب بڑھ گئے گا، سرکاری دستاویزات

28 ستمبر 2014

اسلام آباد (آن لائن) تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے اسلام آباد میں دھرنوں اور سیلاب سے ملکی معیشت کو شدید نقصان کے انکشافات ہوئے ہیں۔ غیر ملکی ذرائع سے اڑھائی ارب ڈالر کی وصولی تاخیر کا شکار ہو گئی ہے جبکہ روپے کی قدر میںکمی سے بیرونی قرضوں میں 210ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے اور دھرنوں سے نمٹنے کیلئے وزارت داخلہ کو اضافی 35کروڑ 70لاکھ روپے کے اجراء سے بجٹ خسارہ میں اضافہ ہوگا۔ سرکاری دستاویزات کے مطابق 2 ارب 50 کروڑ ڈالر کی بیرونی رقوم کی آمد تاخیر کا شکار ہو چکی ہے جن میں ایک ارب ڈالر کے سکوک بانڈ بھی شامل ہیں جبکہ چینی صدر کا دورہ ملتوی ہونے سے 34 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری متاثر ہوئی۔ بیرونی سرمایہ کاری میں کمی سے تجارتی خسارہ مزید بڑھنے کا خدشہ ہے۔ جولائی سے اگست کے دوران برآمدات میں 5.8 فیصد کمی جبکہ درآمدات میں 9 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا۔ مہنگائی کی صورت میںنجی شعبے کو قرضہ کی فراہمی متاثر ہوگی۔ رپورٹ کے مطابق سیلاب سے چاول ، گنے اور کپاس کی 24لاکھ 20 ہزار ایکٹر فصل متاثر ہوئی۔ فصلوں اور لائیو سٹاک کو نقصان پہنچنے سے مہنگائی بڑھے گی جبکہ ریلیف اور بحالی کی سرگرمیوں کی وجہ سے بجٹ خسارے میں اضافہ ہونے کا خدشہ ہے۔