انتخابی نتائج میں تبدیلی ممکن نہیں الیکشن کمشن کل حقائق نامہ اصلاحات کمیٹی کو پیش کرے گا

28 ستمبر 2014
انتخابی نتائج میں تبدیلی ممکن نہیں الیکشن کمشن کل حقائق نامہ اصلاحات کمیٹی کو پیش کرے گا

اسلام آباد ( خبر نگار خصوصی ) الیکشن کمشن نے عام انتخابات 2013ء سے متعلق حقائق نامہ تیار کر لیا۔ حقائق نامہ 29 ستمبر کی انتخابی اصلاحات کمیٹی کے اجلاس میں پیش کیا جائیگا، بیلٹ پیپر کی چھپائی کیلئے صرف 21دن کا وقت تھا، امیدواروں کی تعداد زیادہ اور چھپائی کیلئے افرادی قوت کم تھی۔ مقناطیسی سیاہی کا استعمال قانونی تقاضا نہیں تھا، کم وقت، زیادہ بیلٹ پیپرز اور پرانی مشینوں کی وجہ سے چھپائی میں تاخیر ہوئی۔ امیدواروں کی جانچ پڑتال ریٹرننگ آفیسرز کا کام تھا، الیکشن کمشن کا اس سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ بیلٹ پیپر کے اجراء کے بعد ووٹرز کی اہلیت کو چیلنج نہیں کیا جاسکتا۔ حقائق نامے کے مطابق الیکشن کمشن نے سٹیٹ بینک، نادرا، نیب اور ایف بی آر پر مشتمل سکروٹنی سیل قائم کیا جو مکمل کمپیوٹرائزڈ تھا اسلئے انتخابی نتائج میں تبدیلی ممکن نہیں۔ الیکشن کمشن کے مطابق انتخابات کیلئے 18کروڑ بیلٹ پیپرز چھاپے گئے، وقت اور افرادی قوت کی کمی کے باعث بیلٹ پیپرز کی چھپائی کے عمل میں کچھ تاخیر ہوئی۔
الیکشن کمشن/ حقائق نامہ