66 کروڑ کے ناجائز اثاثے‘ تامل ناڈو کی وزیراعلی جے للتا کو چار سال قید‘ ایک ارب روپے جرمانہ

28 ستمبر 2014
66 کروڑ کے ناجائز اثاثے‘ تامل ناڈو کی وزیراعلی جے للتا کو چار سال قید‘ ایک ارب روپے جرمانہ

بنگلور (نیٹ نیوز) بھارتی ریاست تامل ناڈو کی وزیراعلیٰ جے للتا جے رام کو بنگلور کی ایک عدالت نے آمدن سے زائد 66 کروڑ روپے کے ناجائز اثاثوں کے کیس میں 4 سال قید اور ایک ارب روپے جرمانے کی سزا سنائی ہے، مقدمہ کا فیصلہ 18 سال بعد سامنے آیا۔ واضح رہے 80ء کی دہائی میں تامل فلموں کی معروف اداکارہ رہنے والی جے للتا نے اسی عرصے میں سیاست میں قدم رکھا اور پہلی مرتبہ 1991ء سے 1996ء کے دوران تامل ناڈو کی وزیراعلیٰ رہیں۔ انکے شاہانہ طرز زندگی اور کرپشن کے الزامات پر 1997ء میں انکے گھروں پر پولیس نے چھاپے مارے اور 28 کلو سونا، 750 جوتوں کے جوڑے اور 10 ہزار ساڑھیاں اور دیگر قیمتی سامان قبضے میں لے لیا جبکہ ایک ہزار ایکڑ پر مشتمل انکی دو پرآسائش رہائشگاہوں کو بھی سرکاری تحویل میں لیا گیا۔ گذشتہ روز عدالت کے باہر گفتگو کرتے ہوئے پراسیکیوٹر جنرل بھوانی سنگھ نے بتایا کہ جے للتا بطور وزیراعلیٰ اپنی آمدن سے زائد دولت اور اثاثے بنانے کے جرم کی مرتکب پائی گئی ہیں، انہیں جیل بھی جانا پڑ سکتا ہے۔ انکے 3 قریبی ساتھی بھی کرپشن میں ملوث پائے گئے ہیں۔ واضح رہے کہ جے للتا کرپشن کے الزامات پر پہلے بھی جیل کاٹ چکی ہیں اور تازہ عدالتی فیصلے کے بعد انہیں وزارت اعلیٰ سے استعفیٰ دینا پڑیگا۔ ادھر جے للتا جے رام کو عدالت سے سزا سنائے جانے کے بعد تامل ناڈو کے مختلف شہروں میں سخت کشیدگی پھیل گئی۔ جے للتا اپنی عوامی سیاست اور فلمی امیج کے باعث عوام میں اب بھی بہت مقبول ہیں۔ انکی جماعت اے آئی اے ڈی ایم نے بھارتی پارلیمنٹ میں ریاست کی 39 میں سے 37 سیٹوں پر کامیابی حاصل کی۔ انکے حامیوں نے مظاہرے کرتے ہوئے سڑکوں پر کئی گاڑیاں جلا ڈالیں اور توڑ پھوڑ کی جس کے بعد ان علاقوں میں پولیس کی بھاری نفری طلب کر لی گئی۔
جے للتا / سزا