اصغر خان کیس‘ ایف آئی اے نے تحقیقات کا آغاز کر دیا

28 نومبر 2013

اسلام آباد (سجاد ترین) ایف آئی اے نے اصغر خان کیس میں آئی ایس آئی کی طرف سے 1990ءکے عام انتخابات میں دھاندلی کیلئے سیاستدانوں میں رقوم تقسیم کرنے کی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔ موجودہ حکومت میں شامل اہم افراد کو ایف آئی اے کی جانب سے ایک سوالنامہ ارسال کیا گیا ہے۔ تحقیقات مکمل کرکے رپورٹ وزارت داخلہ کو فراہم کر دی جائے گی اور رپورٹ کی روشنی میں مقدمات درج کرنے کا فیصلہ حکومت کرے گی۔ وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان نے اصغر خان کیس کی تحقیقات کرنے کے لئے کمیٹی بنانے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد ایف آئی اے کے چار اعلیٰ افسران پر مشتمل ایک کمیٹی قائم کر دی گئی تھی۔ اس کمیٹی نے اب باقاعدہ تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔ ایف آئی اے حکام نے بتایا ہے کہ اصغر خان کیس میں جن رہنما¶ں کے نام آئے ہیں ان کو اپنا بیگناہی ثابت کرنے کا بھرپور موقع دیا جائے گا۔ ایف آئی اے حکام نے بتایا ہے کہ 6 ہفتوں کے دوران اس کیس کی تحقیقات مکمل کی جائے گی۔ ایف آئی اے کے ذرائع نے بتایا ہے کہ حکومتی اہم شخصیات کے علاوہ آئی ایس آئی کے سابق سربراہ جنرل اسد درانی ‘ سابق آرمی چیف مرزا اسلم بیگ سے بھی تحقیقات کی جائے گی۔ ایف آئی اے حکام نے بتایا ہے اصغر خان کیس کے حوالے سے جن سیاسی رہنما¶ں کے نام سامنے آئے ہیں ان تمام لوگوں نے اس کیس کی تحقیقات کے لئے ایف آئی اے سے بھرپور تعاون کرنے کی یقین دہانی کروائی ہے جبکہ سابق فوجی جرنیلوں کی جانب سے اس کیس کی تحقیقات کے حوالے سے تعاون نہیں کیا جا رہا ہے۔
تحقیقات