’’آئی ایم ایف نے پہلی قسط کے طور پر 10فیصد سے بھی کم فنڈ دیئے‘‘

28 نومبر 2013
’’آئی ایم ایف نے پہلی قسط کے طور پر 10فیصد سے بھی کم فنڈ دیئے‘‘

لاہور (کامرس رپورٹر) ملک کے زرمبادلہ کے ذخائر میں انتہائی کمی ہونے پر انسٹی ٹیوٹ آف اسلامک بنکنگ اینڈ فنانس کے چیئر مین ڈاکٹر شاہد حسن صدیقی نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف نے امریکی ایجنڈے کے مطابق پاکستان کے لئے 6.7ارب ڈالر کا قرضہ منظور کیا لیکن حیران کن طور پر پاکستان کو قرضے کی قسط کے طور پر صرف 54کروڑ 20لاکھ ڈالر دیئے حالانکہ آئی ایم ایف کو علم تھا کہ پاکستان کو اس سے کئی گنا زیادہ رقم کے قرضے واپس کرنے ہیں جبکہ پاکستان کو پہلی قسط 10فیصد سے بھی کم ملی جس سے باعث معیشت مشکلات سے دو چار ہو گئی ہے اور زرمبادلہ کے ذخائر گر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ چاہتا ہے کہ کم از کم 2014ء تک پاکستان پر اپنی گرفت مضبوط رکھے۔ انہوں نے کہا کہ اگر پاکستان آئی ایم ایف سے قرضہ لئے بغیر معیشت کی حالت بہتر ہوتی۔ معروف ماہر اقتصادیات ڈاکٹر خواجہ امجد سعید نے کہا کہ حکومت نے زر مبادلہ کے ذخائر بڑھانے کے لئے جو اعلان کئے ہیں ان پر عمل کیسے ہو گا۔