حکومتی اقدامات سے خوردنی اشیاء اور سبزیوں کی قیمتوں میں استحکام آ رہا ہے: شہباز شریف

28 نومبر 2013

لاہور (خصوصی رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت ملکی مسائل سے نمٹنے اور عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔ نئے جذبے سے قومی تعمیر نو میں مصروف ہیں اور کم وسیلہ طبقات کی فلاح و بہبود کیلئے اربوں روپے کے انقلابی پروگرام پر عملدرآمد کیا جا رہا ہے۔ ملک و قوم کی ترقی اور خوشحالی کیلئے کئے جانیوالے تمام اقدامات کا مقصد عام آدمی کی زندگی میں بہتری اور آسودگی لانا ہے۔ توانائی کے نئے منصوبے شروع کرنے کیلئے ٹھوس حکمت عملی اپنائی گئی ہے اور غیرملکی سرمایہ کاروں نے پاکستان میں روایتی اور متبادل ذرائع سے توانائی کی پیداوار کے نئے منصوبوں میں زبردست دلچسپی کا اظہار کیا ہے اور اس ضمن میں پنجاب حکومت کے چین، جرمنی، قطر، کینیڈا اور دیگر ملکوں کے سرمایہ کاروں کے ساتھ معاہدے بھی ہوئے ہیں، امید ہے کہ ان معاہدوں پر تیز رفتاری سے عملدرآمد کرکے قوم کو جلد اندھیروں سے نکالنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔ حکومتی اقدامات کے باعث اشیائے خوردنی بالخصوص سبزیوں کی قیمتوں میں استحکام آیا ہے۔ مارکیٹ کمیٹیوں کے طے کردہ نرخوں سے زائد وصولی ہرگز نہیں کرنے دی جائے گی۔ منتخب نمائندے بھی ناجائز منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزوں پر کڑی نظر رکھیں۔ وہ گزشتہ روز مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی سے گفتگو کر رہے تھے۔ شہباز شریف نے منتخب نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں مسائل کی بھرمار اور وسائل کی کمی ہے، تاہم وزیراعظم محمد نوازشریف سابق حکومتوں کی طرح امداد پر انحصار کرنے کی بجائے معیشت کو اپنے پائوں پر کھڑا کرنے کے خواہاں ہیں۔ ایڈ کی بجائے ٹریڈ کی پالیسی سے ملک میں معاشی استحکام آئیگا اور روزگار کے نئے مواقع پیدا ہوں گے۔ یورپی یونین کی طرف سے پاکستان کو جی پی ایس پلس کا درجہ ملنے سے برآمدات میں زبردست اضافہ ہوگا اور ملک میں روزگار کے نئے مواقع پیدا ہوں گے۔ ملک و قوم کو توانائی کے بحران سے نجات دلانا ہمارا مشن ہے۔ پنجاب میں کوئلے، سولر، بائیو ماس، بائیو گیس، گنے کے پھوگ، ہائیڈل اور دیگر ذرائع سے توانائی کے حصول کے منصوبوں کو تیزی سے آگے بڑھایا جا رہاہے-صوبائی حکومت سبزیوں، پھلوں، دالوں اور دیگر اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کو عام آدمی کی پہنچ میں رکھنے کیلئے تمام ضروری اقدامات اٹھا رہی ہے اورحکومتی اقدامات کے باعث صوبے میں اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں استحکام آ رہا ہے،تا ہم ابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے ۔ صوبے میں سستے بازاروں کا دائرہ کار وسیع کیا جا رہا ہے اور پنجاب بھرمیں انتظامیہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ سستے بازار ہفتے میں 3 بار لگائے جائیں جہاں اشیائے ضروریہ عوام کو سستے داموں دستیاب ہوں گی اور آٹے کا 20 کلو کا تھیلا ایکس مل ریٹ پر ملے گا۔ مسلم لیگ (ن) کی قیادت ملک کو درپیش چیلنجز اور مشکلات سے پوری طرح آگاہ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ حکومت عوام کو مسائل کی دلدل سے نکالنے کیلئے دن رات ایک کئے ہوئے ہے۔ کم وسیلہ طبقات کو ترقی کے دھارے میں شامل کرنے اور عوام کو صحت، تعلیم، ٹرانسپورٹ، رہائش اور دیگر بنیادی سہولتوں کی فراہمی پر اربوں روپے صرف کئے جا رہے ہیں۔ پنجاب حکومت نے صوبے میں نوجوانوں کو کاروبار کیلئے آسان شرائط پر قرضوں کی فراہمی کیلئے پنجاب روزگار بینک کے قیام کا فیصلہ کیا ہے جبکہ عوام کو صحت کی معیاری سہولیات کی فراہمی کیلئے ہیلتھ انشورنس سکیم کا اجراء کیا جا رہا ہے جس کا دائرہ کار بتدریج پورے صوبے میں بڑھایا جائیگا۔ صوبے میں کرپشن کے خاتمے اور گڈگورننس کو فروغ دینے کیلئے پنجاب لینڈ ریکارڈ انفارمیشن مینجمنٹ سسٹم کا انقلابی منصوبہ 2014ء تک مکمل ہو جائیگا اور اس منصوبے کی تکمیل سے اراضی کے انتقال اور فرد کے حصول کے حوالے سے پٹوار کلچر کا خاتمہ ہوگا اور عوام کو بغیر رشوت دیئے اراضی کی فرد ملکیت 30 منٹ میں دستیاب ہوگی۔ وزیراعلیٰ نے ارکان اسمبلی کو ہدایت کی کہ عوام کو ریلیف پہنچانے کے حکومتی اقدامات میں وہ بھی اپنا کردار ادا کریں اور اشیائے خورد و نوش کی قیمتوں میں استحکام لانے کیلئے حکومت کے ہاتھ مضبوط کریں۔