آئندہ سال حج آپریشن کو مزید بہتر بنایا جائیگا: سردار یوسف

27 اکتوبر 2016

اسلام آباد (وقائع نگار خصوصی) وفاقی وزیر برائے مذہبی امور سردار یوسف نے کہا ہے کہ حج آپریشن میں کوئی ایک روپے کی کرپشن ثابت نہیں کر سکتا ہے اس سال حج آپریشن میں جس طرح حاجیوں کو سہولیات مہیا کی گئی ان کی مثال تاریخ میںنہیں ملتی ہے آئندہ سال حج آپریشن مذید بہتر کیا جائے گا قومی اسمبلی کے رکن کیپٹن (ر) محمد صفدر نے کہا کہ مشرف اس دور کا یزید ہے اگر مارشل لا ل لگا کر ہماری حکومت نہ ختم کرتا تو پاکستان کو دلدل سے نکال چکے ہوتے ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر برائے مذہبی امور سردار یوسف نے مقامی ہوٹل میں حج آرگنائزیشن ایسوسی ایشن آف پاکستان کے زیر اہتمام ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ورکشاپ میں چیئرمین حج آرگنائزیشن ایسوسی ایشن آف پاکستان ثناء اللہ وائس چیئرمین غفار خان اور ریجنل چیئرمین وحید بٹ نے بھی خطاب کیا سردار یوسف نے کہا کہ حاجیوں کی طرف سے حج آپریشن پرجس طرح مکمل اطمینان کا اظہار کیاگیایہ حج آپریشن کی کامیابی کا ثبوت ہے آئندہ سال حج آپریشن کو مذید بہتر کیا جائے گا۔ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیپٹن صفدر نے کہا کہ جس احسن طریقے سے پاکستان کی حکومت نے حج آپریشن کو چلایا اور کامیابی سے اس کو مکمل کیا اس پر وفاقی وزیر مذہبی امور سردار یوسف مبارکباد کے مستحق ہیں پہلے حاجیوں کی جیب کٹ جاتی تھی اور حاجیوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا تھا مگر فرض کی ادائیگی کے لیے حاجی ہر قربانی کے لیے تیار رہتا تھا حج ادا کرتے وقت مشکلات ہوتی ہیں حاجیوں کی خدمت صحابہ نے اپنا مشن بنایا تھا اور حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے دور میں مکہ شہر والے حاجیوں کے لیے اپنے گھر خالی کر دیتے تھے یہ کام صحابہ کرام رضی اللہ عنہ کا مشن ہے جو آپ ادا کر رہے ہیں اللہ نواز شریف کو مذید طاقت دے کہ وہ حاجیوں کی مذید خدمت کر سکیں جب ہماری حکومت کو موقع ملا تو ہم نے ایٹم بم بنایا پاکستان سے چین تک موٹروے بنا رہے ہیں اور جلد سعودی عرب تک ریلوے لائن بچھائیں گے ورکشاپ میں ملٹی میڈیا بریفنگ بھی دی گئی۔ ہم سب پاکستان میں شریعت نافذ کرنا چاہتے ہیں مگر شریعت اس وقت نافذ ہو گی جب ہم ایک دوسرے کے پیچھے نماز پڑھنے کے لیے تیار ہو جائیں اس پر وہان موجود شرکاء نے یک زبان ہو کر کہا کہ ہم آپ کے پیچھے بھی نماز پڑھنے کو تیار ہیں جس پر کیپٹن صفدر نے کہا کہ میں مولوی نہیں ہوں جس پر شرکاء نے کہا کہ نماز پڑھانے کے لیے مولوی کی شرط نہیں ہو تی۔