ایک تصویر ایک کہانی

27 اکتوبر 2016

یہ مقبرہ مرزا ابوالحسن کا ہے جن کا خطاب آصف خان تھا وہ نور جہاں کے بھائی اور تاج محل میں دفن ملکہ ارجمند بیگم کے والد تھے ۔ شاہ جہاں کی حکمرانی کے آٹھویں سال ان کو خان خاناں اور کمانڈر انچیف بنایا گیا۔ ایک سال بعد لاہور کا گورنر بنایا گیا۔ آصف خان 1641ء میں فوت ہو گئے۔ یہ مقبرہ شاہ جہاں نے تعمیرکرایا۔ یہ ایک ہشت پہلو عمارت ہے۔ جو بہت خوبصورت تھی۔ اسے سنگ مر مر کے پتھروں اور سرخ پتھر سے سجایا گیاتھا۔ رنجیت سنگھ کے دور میں اس مقبرہ سے بھی قیمتی پتھر اُتار لئے گئے۔ اس وقت مقبرہ ویرانی کا منظر پیش کر رہا ہے۔ محکمہ کو اس کی خستہ حالی پر خصوصی توجہ دینی چاہیے۔ (فوٹو :اعجاز لاہوری )