تحریک انصاف کیخلاف طاقت کا استعمال آخری آپشن، اکثریتی ارکان کی رائے

27 اکتوبر 2016

لاہور (فرخ سعید خواجہ) حکومت مخالف سیاسی جماعتوں کو اسلام آباد کے لاک ڈاﺅن کے لیے فری ہینڈ ملنا چاہیے یا حکومتی رٹ منوانے کے لیے انہیں قانونی حدود میں رہنے کا پابند بنانا چاہیے خواہ اس کے لیے ریاست کو طاقت کا استعمال کرنا پڑے۔ نوائے وقت نے یہ سوال مسلم لیگ (ن) کے رہنماﺅں و سینئر کارکنوں سے پوچھا اس سوال کے جواب میں حیران کن طور پر لگ بھگ تمام عہدیداروں اور کارکنوں نے طاقت کے استعمال کو آخری مجبوری کے طور پر اپنانے کی رائے دی تاہم فری ہینڈ دیے جانے یا قانونی حدود کا پابند بنانے کے بارے میں ملے جلے خیالات کا اظہار کیا۔ مسلم لیگ ن لاہور کے سابق صدر اور مسلم لیگ ن کے سینئر کارکن خواجہ احمد حسان نے کہا کہ احتجاج سیاسی جماعتوں کا حق ہے لیکن عمران خان نے اسلام آباد بند کرنے کی دھمکی دے کر حکومت کو امتحان میں ڈال دیا ہے۔ اگر زبردستی اسلام آباد بند کیا جاتا ہے تو وہاں غیرملکی سفارت خانے، تعلیمی ادارے بھی متاثر ہوں گے جس کی کوئی حکومت اجازت نہیں دے سکتی۔ تحریک انصاف اور ان کے حلیفوں سے حکومتی نمائندے بات چیت کر رہے ہیں اگر وہ اسلام آباد فتح کرنے پر بضد رہے تو پھر حکومت آخری آپشن کے طور پر ان کے خلاف کارروائی پر مجبور ہو جائے گی۔ مشرف دور میں صعوبتیں اٹھانے والے گوجرانوالہ کے مسلم لیگی کارکن اور مسلم لیگ ن یوتھ ونگ پنجاب کے جنرل سیکرٹری سردار خالد ملک نے کہا کہ اسلام آباد بند کرنے کی دھمکیاں اور تحریک انصاف کا ٹریک ریکارڈ دیکھتے ہوئے انہیں کسی بھی صورت اسلام آباد میں داخل ہونے یا اسلام آباد بند کرنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔ طاقت کا استعمال مناسب نہیں لیکن لاتوں کے بھوت باتوں سے نہ مانیں تو پھر حکومت کے پاس اس کے سوا کوئی چارہ نہیں ہو گا۔ مشرف دور میں ایک درجن سے زائد بار گرفتار ہونے والی سیاسی کارکن اور شہباز شریف سیکرٹریٹ شعبہ خواتین کی سربراہ سلمیٰ بٹ ایم پی اے نے کہا کہ ہم نے مشرف آمریت میں بھی قانون اور آئین کے دائرے میں رہتے ہوئے احتجاج کیا جس پر ہمیں تشدد کا نشانہ بنایا جاتا رہا۔ گرفتاریاں کی گئیں۔ ہماری حکومت نے خود کو صحیح جمہوری حکومت ثابت کیا ہے لیکن اسلام آباد پر حملہ آور ہونے کے لیے فری ہینڈ نہیں دینا چاہیے۔ مشرف دور میں ڈیڑھ درجن سے زائد بار گرفتار ہونے والے مسلم لیگی کارکن اور شہباز شریف سیکرٹریٹ کے نمایاں سیاسی کارکن شیخ شاہد اقبال نے کہا کہ تحریک انصاف کے کارکنوں کو ان کی قیادت آگ میں جھونکنے جا رہی ہے۔ کارکنوں کو سمجھداری کا ثبوت دینا چاہیے ورنہ ہماری طرح کل وہ بھی پچھتائیں گے۔ مسلم لیگ ن پنجاب کے فنانس سیکرٹری اور مشرف دور میں مسلم لیگ ن لاہور کے جنرل سیکرٹری، صدر رہنے والے میاں مرغوب احمد نے کہا کہ تحریک انصاف کا ایجنڈا محض احتجاج ہوتا تو انہیں فری ہینڈ ملنا چاہیے تھا لیکن انہوں نے طالبان کی طرح اسلام آباد کا محاصرہ کرنے کی دھمکی دی ہے جس کی کسی صورت اجازت نہیں ہونی چاہیے۔
طاقت آخری آپشن