دنیا میں خواتین پارلیمنٹیرینز سے جنسی بدسلوکی عام ہے: رپورٹ

27 اکتوبر 2016

جنیوا (صباح نیوز) ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ خواتین پارلیمنٹرینز کے ساتھ بھی جنسی بدسلوکی یہاں تک کہ تشدد عام ہے۔عالمی سطح پر اراکین پارلیمان کی نمائندگی کرنیوالی بین الاقوامی تنظیم کے مطابق دنیا بھر میں خواتین پارلیمان کو جنسی طور پر ہراساں کئے جانے یہاں تک کہ تشدد کا نشانہ بنائے جانے کا معاملہ عام ہے۔ انٹر پارلیمنٹری یونین (آئی پی یو) یہ رپورٹ جنیوا میں جاری اپنے سالانہ اجلاس میں جاری کر رہی ہے۔ اس سروے میں صرف 55 خواتین ارکان پارلیمان نے حصہ لیا لیکن وہ دنیا کے مختلف حصوں کی نمائندگی کرتی ہیں۔ ان میں سے 80 فیصد خواتین ممبران پارلیمنٹ کا کہنا ہے کہ انہیں کسی نہ کسی شکل میں ذہنی یا جنسی طور ہراساں کئے جانے یا تشدد کا سامنا رہا ہے۔