متروکہ وقف املاک بورڈ نے شیخ رشید کو 15 دن میں لال حویلی خالی کرنے کا نوٹس دے دیا

27 اکتوبر 2016

راولپنڈی (نوائے وقت رپورٹ) محکمہ متروکہ وقف املاک راولپنڈی کے ایڈمنسٹریٹر نے عوامی مسلم لیگ کے صدر اور قومی اسمبلی کے رکن شیخ رشید احمد کے لال حویلی پر قبضے کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے 15 دن میں لال حویلی خالی کرنے یا اپیل کرنے کا نوٹس دے دیا ہے۔ لاہور میں مقیم شیخ رشید احمد کے چھوٹے بھائی شیخ صدیق احمد کے نام مکان نمبر D-158 (لال حویلی) کی ملکیتی رجسٹری بھی محکمہ متروکہ وقف املاک نے مسترد کردی ہے۔ لال حویلی کے ذرائع کے مطابق شیخ رشید احمد محکمہ متروکہ وقف املاک کے اس اقدام کے بارے میں آج جمعرات کو تین بجے نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں پریس کانفرنس کر کے اپیل کرنے یا نہ کرنے کے بارے میں اپنے لائحہ عمل کا اظہار کریں گے۔ شیخ رشید احمد کا کہنا تھا ک حکومت اپنے خاتمے کا سامنا تیار کر رہی ہے میں گرفتاریوں سے ڈرنے والا نہیں۔ شیخ راشد شفیق نے کہا کہ D-158 (لال حویلی) کی ملکیتی رجسٹری شیخ صدیق کے نام ہے جبکہ ہم پولیس گارڈ کی رہائشی مندر کی جگہ کا محکمہ متروکہ وقف املاک کو کرایہ ادا کر رہے ہیں اب محکمہ نے شیخ صدیق کو D-158 خالی کرنے اور شیخ رشید احمد کو مندر کی جگہ کی کرایہ داری منسوخ کرنے کا نوٹس دے دیا ہے جو قابل مذمت ہے۔پاکستان عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈا پور نے لال حویلی خالی کرنے کے نوٹس کو حکومت کی انتقامی اور اوچھی کارروائی قرار دیتے ہوئے اس کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ سب سے بڑے قبضہ گروپ ایوان وزیر اعظم اور ایوان وزیر اعلیٰ میں بیٹھے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ شیخ رشید نے حکمرانوں کی لوٹ مار کو انتہائی جرات مندی کے ساتھ بے نقاب کیا جس کا شریف برادران کو رنج ہے اور حکمرانوں نے اپنی روایتی سیاست کے مطابق انتقامی کارروائیاں شروع کر دیں ہیں۔ متروکہ وقف املاک بورڈ کے چیئرمین صدیق الفاروق نے کہا ہے کہ لال حویلی کو خالی کرنے کا نوٹس جاری نہیں کیا گیا، بلکہ لال حویلی سے ملحق10مرلے کی جگہ خالی کرنے کا نوٹس جا ری کیا گیا ہے۔ لال حویلی سے ملحق اراضی جو10مرلے پر مشتمل ہے شےخ رشےد احمد نے سابق دور میںقبضہ کیا تھا جسے خالی کرانے کیلئے نوٹس جا ری کیا گیا ہے بدھ کو نوائے وقت سے بات چےت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شیخ رشید احمد کے بھائی شےخ صدےق نے یہ جگہ الاٹ کرنیکی درخواست بھی دی تھی تاہم متروکہ وقف املاک بورڈ نے یہ در خواست مسترد کر دی ہے۔
شیخ رشید نوٹس