اسرائیلی ارکان پارلیمنٹ کو قبلہ اول کی بے حرمتی کی اجازت دیدی گئی

27 اکتوبر 2016

مقبوضہ بیت المقدس (آن لائن)اسرائیل کے عبرانی ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق پولیس نے کنیسٹ کے تمام ارکان کو مسجد اقصی میں داخل ہونے اور وہاں پر مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کی ایک بار پھر اجازت دے دی ہے جس پر فلسطینی عوام میں شدید رد عمل سامنے آیا ہے۔ عبرانی زبان میں نشریات پیش کرنے والے ٹی وی2 کے مطابق پولیس حکام نے ایک اعلی سطحی اجلاس میں فیصلہ کیا کہ اسرائیلی ارکان پارلیمنٹ اور وزرا کے قبلہ اول میں داخلے اور عبادت پرعائد پابندی ختم کی جائے۔خیال رہے کہ اسرائیلی پولیس نے ایک سال قبل قبلہ اول میں کشیدگی پیدا ہونے کے بعد ارکان کنیسٹ اور وزرا کے مسجد اقصی میں داخلے پر پابندی لگا دی تھی۔ اسرائیلی ارکان کنیسٹ کی قبلہ اول میں عبادت کے لئے 14 شرائط عائد کی ہیں۔ دوسری جانب یہودی اشرار کی جانب سے مسجد اقصی اور حرم قدسی کی مسلسل بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے۔چالیس اسرائیلی فوجیوں سمیت ایک سو یہودی شرپسندوں نے قبلہ اول میں داخل ہو کر مذہبی رسومات کی ادائیگی اورعبادت کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔ اس موقع پر فلسطینی نمازیوں اور یہودی آباد کاروں اور صہیونی پولیس کے ساتھ جھڑپیں بھی ہوئیں۔خیال رہے کہ اسرائیلی پولیس کی جانب سے جمعہ اور ہفتہ کے علاوہ دیگر ایام میں صبح اور شام کے اوقات میں یہودی آباد کاروں کو نہ صرف مسجد اقصیٰ میں داخلے کی اجازت دی جاتی ہے بلکہ اسرائیلی فورسز یہودی شرپسندوں کو قبلہ اول میں داخلے کے لئے فول پروف سکیورٹی مہیا کرتے ہیں۔ ادھر فلسطینی اتھارٹی کے زیرانتظام جیلوں میں سیاسی بنیادوں پر ڈالے گئے پانچ فلسطینی قیدیوں کی بھوک ہڑتال جاری ہے۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلامی تحریک مزاحمت حماس کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ عباس ملیشیا کی قید میں موجود پانچ سیاسی کارکنوں عبادہ مرعی، مسجد عراوی، احمد الز غیر، فارس الجبور اور قتیبہ عازم کئی روز سے بلاجواز حراست کے خلاف بھوک ہڑتال جاری رکھے ہوئے ہیں۔ تمام سیاسی کارکنان کو فوری اور باعزت رہا کیا جائے۔ ادھر فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر قلقیلیہ میں علی الصبح شاہراہ عام پر ایک یہودی آبادکار نے اپنی گاڑی کی ٹکر سے تین فلسطینیوں کو کچل دیا جس کے نتیجے میں تینوں شدید زخمی ہو گئے ہیں۔ زخمی ہونے والوں میں میاں بیوی اور ایک دوسرا شہری شامل ہے۔ دو زخمیوں کی حالت تشویشناک بیان کی جاتی ہے۔