مقدمہ قتل میں ملوث ملزم 20سال روپوش رہنے کے بعد عدالت میں پیش ہو گیا

27 اکتوبر 2016

لاہور(وقائع نگار خصوصی) قتل کے مقدمے میں ملوث ملزم ضمانت پر رہا ہونے کے بعد20سال تک رو پوش رہنے کے بعد گزشتہ روز عدالت میں پیش ہو گیا۔ ملزم کے خلاف مقدمہ درج ہے کہ اس نے1996ء میں شہباز کو قتل کیا تھا۔ ملزم نے اپنی گرفتاری کے بعد عدالت سے ضمانت کرائی اور بیرون ملک چلا گیا۔ وہ بیس سال تک وہاں مقیم رہنے کے بعد پاکستان واپس آیا تو اسے معلوم ہوا کہ اس کے خلاف قتل کا مقدمہ ختم نہیں ہوا بلکہ اسے اشتہاری قرار دیا جا چکا ہے ۔ اس پر ملزم اپنے وکیل سید فرہاد علی شاہ کے ہمراہ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج گلزار احمد خالد کی عدالت میں حاضر ہو گیا تا ہم گزشتہ روز وکلاء کی ہڑتال کے باعث اس کے خلاف درج مقدمے کی سماعت 29اکتوبر تک ملتوی کر دی گئی۔