شہبازشریف نے جاوید صادق سے مل کر 26 ارب 55 کروڑ کی کرپشن کی عمران

27 اکتوبر 2016

اسلام آباد (اپنے سٹاف رپورٹر سے) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) پر کرپشن کے مزید الزامات عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ کینیڈین شہری جاوید صادق وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کے فرنٹ مین ہیں، 4 منصوبوں میں 26 ارب 55 کروڑ کی کرپشن ہوئی اور نیواسلام آباد کا کنٹریکٹ بھی جاوید صادق کو ہی ملا ہے۔ 2 نومبر سے قبل مزید انکشافات کرینگے، جب 10 لاکھ لوگ جب اسلام آباد میں آجائیں گے تو لاک ڈاو¿ن تو خود بخود ہوجائیگا، سب سے پہلے آزاد عدلیہ کیلئے جدوجہد کی، کرپشن کی جنگ پاکستان کی جنگ ہے، طاقتور کو قانون کے تحت لانا ہوگا، خورشید شاہ ڈبل شاہ ہیں۔ اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے دعویٰ کیا کہ جاوید صادق اب تک 15 ارب روپے کمیشن وصول کرچکے ہیں اور پنجاب حکومت کی ہر ڈیل کے پیچھے یہ صاحب ہوتے ہیں۔پی ٹی آئی چیئرمین نے مزید الزام عائد کیا کہ 4 منصوبوں میں 26 ارب 55 کروڑ کی کرپشن ہوئی اور نیو اسلام آباد کا کنٹریکٹ بھی جاوید صادق کو ہی ملا ہے۔ عمران خان نے کہاکہ دو نومبر کے دھرنے سے قبل وہ جاوید صادق کے حوالے سے مزید انکشافات کریں گے۔ انہوںنے کہاکہ حکمران سمجھتے ہیں کہ کرپشن قانونی اور احتجاج غیر قانونی ہے، اگر پرامن احتجاج روکنے کے لیے پکڑ دھکڑ کی گئی تو سخت رد عمل کا سامنا کرنا پڑیگا۔ قبل ازیں اسلام آباد ہائی کورٹ بار سے خطاب میں پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا کہ وزیراعظم سے لے کرپٹواری تک سب قانون کے تحت ہیں تاہم ملک میں جمہوریت نہیں بادشاہت قائم ہے، وزیراعظم نے پارلیمنٹ میں سب کے سامنے جھوٹ بولا اور کہا کہ خود کو احتساب کےلئے پیش کرتے ہیں، سربراہ تحریک انصاف نے کہاکہ نواز شریف پر نیب میں 14 کیسز ہیں لہذا اگر نیب اور ایف بی آر اگر ٹھیک ہوں گے تو سب ٹھیک ہوگا۔ عمران نے اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کو ڈبل شاہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ خورشید شاہ اورنواز شریف کے خلاف نیب میں کیسز ہیں لہذا خورشید شاہ کیسے نیب کے سربراہ کی مخالفت کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت اور احتساب ایک ہی چیز ہے، جمہوریت میں پرامن احتجاج ہرکسی کاحق ہے اور ہم جمہوریت ڈی ریل کیے بغیر احتساب چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا فضل الرحمن کو دیکھ کر کون مسلمان ہوگا‘ نام لو تو لوگ فوری ڈیزل ڈیزل کہنے لگ جاتے ہیں‘ نواز شریف کی چوری پکڑی گئی ہے‘ 2 نومبر کو تلاشی دیں گے یا استعفیٰ دیں گے‘ خورشید شاہ بہت بڑے کرپٹ ہیں نوازشریف سے ملے ہوئے ہیں۔ خورشید شاہ‘ آصف علی زرداری اور نواز شریف سب کرپٹ ملے ہوئے ہیں۔ عمران خان نے کہا کہ طاہر القادری کی یہ بات پسند ہے کہ وہ لوگوں کو درس دیتے ہیں۔ طاہر القادری دنیا بھر میں اﷲ اور رسول کا پیغام لے کر جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پانامہ معاملے پر احتساب چاہتے ہیں۔ ہم جمہوریت کو سبوتاژ نہیں کرنا چاہتے۔ جمہوریت میں سب لوگ جوابدہ ہیں۔ وزیراعظم ہو یا پٹواری سب قانون کو جوابدہ ہیں جس پر کرپشن کا الزام لگے وہ اس کا جواب دیتا ہے ۔عدلیہ آزاد ہوگی تو کرپشن کو چیک کریگی۔ پاکستان میں الیکشن ہوجاتے ہیں لیکن جمہوریت نہیں آتی۔
عمران خان