نادرا، این ٹی ایس کی خدمت، عوام پریشان

27 اکتوبر 2016
نادرا، این ٹی ایس کی خدمت، عوام پریشان

مکرمی! بھلائی کے کسی بھی کام کو خدمت کہتے ہیں لیکن ہمارے ہاں اس کا مطلب الٹ ہی نکال لیا گیا ہے۔ میرے محلہ بلال کالونی داروغہ والا بند روڈ لاہور میں چند دن پہلے ’’نادرا‘‘ کی گاڑی آئی۔ مسجد میں اعلان ہوا جس نے شناختی کارڈ بنوانا ہے گاڑی کھڑی ہے کارڈ بنوا لیں۔ لوگ دھڑا دھڑ باہر نکلے اور لمبی لائن لگ گئی، پراسیس مکمل ہونے کے بعد ہر شخص پوچھتا کارڈ کہاںسے ملے گا کسی کو عملہ خود ہی بتا دیتا جوہر ٹائون سے ملے گا۔ عوام ایک دم پریشان ہو جاتے پھر خاموشی سے چلے جاتے۔ چند دن بعد دوبارہ گاڑی آئی، اعلان ہوا، جن لوگوں کے شناختی کارڈ نہیں بنے تھے انہوں نے بنوا لئے۔ یہ گاڑی ٹائون شپ کی تھی۔ عملہ نے بتایا کارڈ ٹائون شپ سے ملے گا جو سنتا سر پکڑ کر بیٹھ جاتا۔ ایک بزرگ نے کہا ہماری آبادی سے 4 کلومیٹر دور سنگھ پورہ میں ’’نادرا‘‘ کا دفتر ہے ہم وہاں نہیں جا سکے۔ ٹائون شپ یا جوہر ٹائون لینے کیسے جائیں گے۔ میری اعلی حکام سے اپیل ہے کہ اگر عوام کی خدمت ہی کرنا ہے تو گاڑی علاقہ کی ہی بھیجی جائے یا شناختی کارڈ علاقائی دفتر یا بذریعہ ڈاک ہی مل جائے۔ یہ حال صرف نادرا کا ہی نہیں۔ ’’این ٹی ایس‘‘ کا بھی ہے۔ ابھی حال ہی میں ٹیچرز کے لئے ٹیسٹ لیا پورے لاہور کے لئے ماڈل ٹائون کے سکولوں کو سینٹر بنایا گیا۔ ایک لڑکی نیشنل ٹائون سے رکشا پر پہنچی تو بڑبڑا رہی تھی میں نے پوچھا بیٹا کیا بات ہے اس نے بتایا نیشنل ٹائون سے آنے جانے کا 1500 روپے کرایہ دے کر آئی ہوں یہ کیا سینٹر ہمارے علاقے کے لوگوں کے لئے شاہدرہ وغیرہ میں نہیں بنایا جا سکتاتھا۔ افسروں کو خیال رکھنا چاہئے۔ آپ کی طرح ہر ایک کے پاس اپنی گاڑی نہیں ہوتی ابھی بہت سے ایسے لوگ بھی ہیں جن کے پاس سائیکل بھی نہیں اگر ہو بھی تو اتناسفر سائیکل پر نہیں کیا جا سکتا۔ بچیوں اور خواتین کیلئے تو اور زیادہ پریشانی کا باعث بنتاہے۔ (ملک امتیاز۔ 29 احمدٹائون، باغبان پورہ،0321-4983255،لاہور)