ضلع مظفرگڑھ کا چیئرمین کون ہو گا؟

27 اکتوبر 2016

بلدیاتی انتخابات کا اعلان ہو تے ہی تمام مقامی مسلم لیگی دھڑوں نے اپنی اپنی لابنگ شروع کر دی تھی اور تمام مقامی دھڑوں کی کوشش تھی کہ وہ اپنی جماعت سے ذیادہ سے ذیادہ ٹکٹیں حاصل کر کے اپنے مقامی دھڑے کو واضع برتری دلا سکے اور آگے چل کر تحصیل اور ضلع کی قیادت کے لیے قسمت آزمائی کر یں اس حکمت عملی کے تحت تحصیل جتوئی میں پچھلے پچاس سال سے سیاست کے میدان میں برسرپیکار ،بزرگ رہنما اور بخاری گروپ کے قائد مخدوم سید عبداللہ شاہ بخاری نے بھی مربوط حکمت عملی کے تحت اپنی لیگی قیادت سے تحصیل جتوئی اور تحصیل علی پور کے لیے ٹکٹوں کے حصول کے لیے درخواستیں دیں جس پر لیگی قیادت سے مذاکرات ہوئے لیگی قیادت کاکہنا تھا کہ آپ چونکہ تحصیل جتوئی کی نمائندگی کرتے ہیں اس لیے آپ تحصیل جتوئی میں ہی مسلم لیگ (ن) کے ٹکٹ لیں مگر بخاری گروپ کے قائد مخدوم سید عبداللہ شاہ بخاری کا کہنا تھا کہ ہم پچھلے دس سال سے آپ کی جماعت میں چلے آرہے ہیں اور آپ ہی کے کہنے پر ہم نے تحصیل علی پور میں قومی اسمبلی کی سیٹ پر جنرل الیکشن لڑا اور پچپن ہزار سے زائد ووٹ حاصل کیے اس لیے ہمارے بخاری گروپ کو ہی تحصیل علی پور میں ٹکٹیں دی جائیں جو کہ ہمارا حق ہے مگر لیگی قیادت کا بے حد اصرار تھا کہ چونکہ علی پور کے مقامی ممبر قومی اسمبلی سردار عاشق حسین خان گوپانگ آزاد حیثیت سے منتخب ہو کر (ن)لیگ میں شامل ہو چکے ہیں اس لیے تحصیل علی پور کی ٹکٹوں پر ان کا ذیادہ حق ہے آخر کار دونوں قیادتیں اس فارمولے پر متفق ہو گیئں کہ بخاری گروپ اپنی دونوں تحصیلوں تحصیل جتوئی اور علی پور میں آزاد حیثیت سے الیکشن میں لے کر اپنی برتری ثابت کر دے تو لیگی قیادت کی طرف سے وہ حکومتی گروپ کے ضلعی چیرمین کے امیدوار ہونگے جس پربخاری گروپ کے قائد نے آمین کہا اور حالیہ بلدیاتی الیکشن میں آزاد حیثیت سے حصہ لیکر اپنی بھر پور سیاسی بصیرت کے بل بوتے پر دونوں مذکورہ تحصیلوں میں بھر پور کامیابی حاصل کی اور انفرادی طور پر بخاری گروپ کی واضع برتری ظاہر کر دی ضلع مظفر گڑھ میں بخاری گروپ کی واضع برتری کے باوجود بخاری گروپ کے سیاسی مخالفین نے لیگی قیادت کواپنی سازشوں کے ذریعے ایک با پھر اپنی طرف مائل کیا اور ضلعی چیئرمین کا فیصلہ اپنے حق میں کرانے کی کوشش کی جس پر بخاری گروپ کے قائد مخدوم سید عبداللہ شاہ بخاری نے لیگی قیادت سے ہنگامی ملاقات کی اور انہیں اپنا وعدہ یاد دلایا جس پر لیگی قیادت نے اپنی مجبوریاں بخاری گروپ کے قائد کے سامنے رکھیں مگر قائد بخاری گروپ مخدوم سید عبداللہ شاہ بخاری اپنے حق کے لیے ڈٹ گئے اور انہوں نے لیگی قیادت کو واضع کر دیا کہ اگر اس کے ساتھ وعدہ خلافی ہوئی تو وہ بھی اپنے فیصلوں میں آزاد ہونگے جس پر لیگی قیادت نے موقع کی نزاکت کو مدنظر رکھتے ہوئے بخاری گروپ کے قائد کو یقین دہانی کرائی کہ آپ کے ساتھ ناانصافی نہیں ہو گی آپ اپنے گروپ کے تمام آزاد چیرمینوں کے فارم (ن)لیگ کی طرف سے پر کریں اور جب بھی ضلعی چیرمین کے انتخابات ہونگے آپ یعنی بخاری گروپ ہی مسلم لیگ (ن )کی طرف سے ضلعی چیرمین کا امیدوار ہو گا جس پر بخاری گروپ کے قائد مخدوم سیدعبداللہ شاہ بخاری نے اپنے گروپ کے چھیالیس سے زائد چیرمینوں کو (ن) لیگ میں شامل کر دیا اب صورت حال ایک با پھر گھمبیر ہو رہی ہے اور بخاری گروپ کے قائد مخدوم سیدعبداللہ شاہ بخاری کے سیاسی مخالفین نے ایک بار پھر لیگی قیادت کو ورغلانے کی کوششیں شروع کر دی ہیں اور اس سلسلے میں ضلع مظفر گڑھ میں بخاری گروپ کے سب سے بڑے سیاسی مخالف ملک سلطان محمود ہنجرا نے چند روز قبل مسلم لیگ (ن )کے سربراہ میاں محمد نواز شریف سے ملاقات کی اور انہیں اپنے حق میں فیصلہ کرانے کے لیے آمادہ کرنے کی کوشش کی جس میں اخباری اطلاعات کے مطابق وہ کافی حد تک کامیاب بھی رہے دوسری طرف بخاری گروپ کے قائد آج بھی لیگی قیادت کی طرف سے کیے گئے وعدے کی پاسداری کی آس لگائے بیٹھے ہیں بخاری گروپ کے قائد کا کہنا ہے کہ لیگی قیادت نے ہمارے ساتھ کسی قسم کی ناانصافی کی تو پھر ہم بھی اپنے فیصلے کرنے میں آزاد ہونگے انہوں نے کہا ہماری تمام تر توجہ مخصوص نشتوں کے انتخابات پر ہے جس کے بعد آئندہ کی حکمت عملی طے کی جائے گی اور یہ فیصلہ آنے والا وقت ہی کرے گا کہ ضلع مظفر گڑھ کا چیئرمین کون بنتا ہے ؟