شدید دھند کے باعث حادثے‘ 5 افراد جاں بحق‘ درجنوں زخمی‘ آزاد کشمیر اور کوئٹہ میں شدید سردی کی لہر

27 دسمبر 2008
لاہور (سٹی رپورٹر + نیوزرپورٹر+ خبر نگار + نمائندہ خصوصی + ایجنسیاں) پنجاب کے میدانی علاقے شدید دھند کی لپیٹ میں ہیں اور آئندہ 24 گھنٹے میں اس میں مزید اضافہ ہو گا۔ دھند کے باعث پنجاب کی اہم شاہراہوں پر ٹریفک کا نظام بری طرح متاثرہوا ہے۔ 10 فٹ آگے کوئی چیز دکھائی دینا مشکل تھا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق جمعہ کی صبح تک لاہور‘ سیالکوٹ‘ منڈی بہائو الدین‘ جہلم ‘ ملتان‘ ڈی جی خان‘ شور کوٹ اور بہاولپور میں شدید دھند چھائی رہی۔ لاہور اور گرد و نواح میں بھی صبح کے اوقات میں شدید دھند کا سلسلہ دن 11 بجے تک جاری رہا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق ملک بھر میں موسم خشک اور سرد رہیگا۔ خبرنگار خصوصی کے مطابق شدید دھند اور موسمی ناہمواری کے باعث اندرون و بیرون ملک پروازیں براہ راست متاثر ہوئیں۔ گزشتہ روز دوپہر گیارہ بجے تک کوئی پرواز لاہور ائر پورٹ پر نہیں اتری اور نہ ہی روانہ ہو سکی۔ٹرینوں کی آمدورفت کا شیڈول بھی متاثر ہوا‘ صبح 10بجے سے دوپہر 1بجے کے درمیان آنے والی ایکسپریس اور میل ٹرینیں 2سے3گھنٹے تک تاخیر سے آئیں جبکہ لاہور سے کراچی اسلام آباد ملتان اور دیگر شہروں کو جانے والے مسافر بھی اس سے متاثر ہوئے۔ موٹر وے پولیس نے بھی ہنگامی اقدامات کر لئے ہیں ان خیالات کا اظہار ایس ایس پی موٹر وے این 5 سنٹرل زون ایم 2‘ شعیب دستگیر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ دھند کے دوران سفر کرنے والے ہیڈ لائٹس بھی درست حالت میں میں ہونی چاہئیں۔ اس سلسلہ میں ہر ٹول پلازہ پر موٹر وے پولیس کے اہلکار گاڑیاں استعمال کرنے والوں کو ہدایات بھی دیتے رہیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ دھند میں سفر کرتے ہوئے موبائل فون اور ٹیپ ریکارڈر کے استعمال سے اجتناب کرنا چاہئے اور آہستہ ڈرائیونگ کرنے والے ہارڈ شولڈر میں رہیں تاکہ حتی الامکان حادثات سے محفوظ رہا جا سکے۔ آزاد کشمیر میں سردی کی شدت میں اضافہ ہو گیا ہے۔ زلزلہ متاثرہ علاقوں میں سردی کی حالیہ لہر سے عارضی خیموں اور شیلٹرز میں مقیم متاثرین کو مختلف امراض کا سامناہے۔ متاثرہ بالائی علاقوں میں پہاڑوں پر برف باری سے ٹھنڈی ہوائیں چلنے سے نزلہ زکام‘ کھانسی‘ بخار نمونیہ و دیگر امراض کی شرح میں اضافہ ہو گیا ہے۔ وادی کوئٹہ سمیت بلوچستان کے دوسرے علاقوں میں سردی کی شدت میں اضافہ ہو گیا ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق کوئٹہ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی ایک اور زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 22 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ کوئٹہ کے کئی علاقوں میں گیس پریشر میں کمی کی شکایات عام ہیں۔ قلات میں درجہ حرارت منفی دو ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے۔