بھارتی دھمکیوں کیخلاف مذہبی جماعتوں کے ملک گیر مظاہرے‘ پاک فوج سے اظہار یکجہتی

27 دسمبر 2008
بھارتی دھمکیوں کیخلاف مذہبی جماعتوں کے ملک گیر مظاہرے‘ پاک فوج سے اظہار یکجہتی
لاہور (آن لائن/ نیوز رپورٹر) جماعت اسلامی‘ جمعیت اہلحدیث‘ تحریک حرمت‘ جمعیت علماء اسلام سمیت دیگر مذہبی جماعتوں کی اپیل پر گذشتہ روز ملک بھر میں بھارت کی دھمکیوں ‘ جماعۃ الدعوۃ پر پابندی اور قبائلی علاقوں میں امریکی میزائل حملوں کیخلاف لاہور‘ گوجرانوالہ‘ فیصل آباد‘ سیالکوٹ‘ کوئٹہ‘ کراچی‘ پشاور سمیت آزاد کشمیر اور قبائلی علاقوں میں شدید احتجاج کیا گیا جبکہ لاہور میں جمعیت اہلحدیث‘ متحدہ طلبا محاذ‘ اسلامی جمعیت طلبہ پنجاب یونیورسٹی نے احتجاجی مظاہرے کئے۔ اس دوران مظاہرین نے بھارتی پرچم نذر آتش کئے اور پاک فوج سے مکمل اظہار یکجہتی کیا جبکہ مقررین نے جماعۃ الدعوۃ پر پابندی کے خاتمے‘ حافظ سعید‘ ڈاکٹر عبدالقدیر سمیت دیگر کی رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ اگر بھارت نے جارحیت کی تو پوری قوم افواج پاکستان کا بھرپور ساتھ دیگی۔ علاوہ ازیں نماز جمعہ کے اجتماعات میں بھی علماء کرام نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان پر جارحیت کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائیگا‘ ملکی سلامتی کیلئے ہم سب متحد ہیں۔ اس موقع پر بھارتی دھمکیوں کیخلاف مذمتی قراردادیں پاس کی گئیں۔ لارنس روڈ لاہور میں جمعیت اہلحدیث کے زیرانتظام بڑی ریلی نکالی گئی اور بھارت کے خلاف زبردست نعرے بازی کی گئی۔ ریلی کے ہزاروں شرکا سے جمعیت اہلحدیث کے مرکزی ناظم اعلیٰ علامہ ابتسام الٰہی ظہیر‘ محمد علی یزدانی و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پورے پاکستان کے لوگ جماعۃ الدعوۃ کے حق میں آواز بلند کر رہے ہیں‘ حکومت رفاہی اداروں پر پابندیاں لگاکر ناانصافی سے کام لے رہی ہے۔ دریں اثناء جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ سینیٹر مولانا سمیع الحق نے کہاکہ بھارت امریکہ کی شہ پر پاکستان کو جنگ کی دھمکیاں دے رہا ہے‘ مضبوط پیغام نہ دیا گیا تو وہ جارحیت سے باز نہیں آئے گا۔ جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امیر سید منور حسن نے کہاکہ جنگ کی دھمکیاں حکمرانوں کی کمزور پالیسیوں کا نتیجہ ہیں‘ اب بھارت بھی امریکہ بننے کی کوشش کر رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کو خوش کرنے‘ جماعۃ الدعوۃ اور دیگر جماعتوں و تنظیموں پر پابندیوں کی مذمت کی۔ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے جنرل سیکرٹری مولانا عبدالغفور حیدری نے کہاکہ پاکستان پر جارحیت کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ جماعت اسلامی کے نائب امیر لیاقت بلوچ‘ مولانا عبدالمالک‘ فرید پراچہ‘ حافظ ادریس‘ امیر العظیم و دیگر نے کہاکہ انٹرپول کے سیکرٹری جنرل نے بھارتی مئوقف کو دنیا کے سامنے جھوٹا ثابت کر دیا‘ ممبئی حملے بھارت کی اپنی خفیہ ایجنسیوں کا شاخسانہ ہیں۔ پاکستان کی آزادی و سلامتی کے لئے ہم سب متحد ہیں‘ جنگ کی دھمکیوں کے بعد بھارت سے تجارتی روابط ختم نہ کرنا افسوسناک ہے۔ جمعیت علمائے اسلام (نفاذ شریعت) کے سربراہ انجینئر سلیم اللہ نے کہاکہ پاکستان کے چپے چپے کا دفاع ہر پاکستانی اپنے ایمان کا حصہ سمجھتا ہے۔ قاری زوار بہادر نے کہاکہ بھارت‘ امریکہ اور اسرائیل منظم منصوبہ بندی کے تحت پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔ تحریک حرمت رسول کے جنرل سیکرٹری قاری یعقوب شیخ اور چیف آرگنائزر حافظ خالد ولید نے کہاکہ بھارتی دھمکیوں کا منہ توڑ جواب دیا جائے۔ جمعیت علماء اسلام (ف) کے مرکزی رہنما مولانا امجد نے کہاکہ جماعۃ الدعوۃ پر پابندی ختم کی جائے۔ مرکزی جماعت اہلحدیث کے امیر علامہ زبیر احمد ظہیر نے کہاکہ پاکستان بھارت دھمکیوں کا جراتمندانہ اور منہ توڑ جواب دے۔ امیر جماعت اہلحدیث حافظ عبدالغفار نے کہاکہ امریکہ اور اسرائیل کی شہ پر بھارت کوئی بھی حماقت کر سکتا ہے لیکن اگر ایسا کیا گیا تو یہ انڈیا کے لئے بہت تباہ کن ثابت ہو گا۔ دریں اثناء پنجاب یونیورسٹی کی جامعہ مسجد میں نماز جمعہ کے بعد اسلامی جمعیت طلبہ پنجاب یونیورسٹی نے مسجد کے باہر پاک فوج سے اظہار یکجہتی کیلئے مظاہرہ کیا۔ شرکا نے بھارت کیخلاف زبردست نعرے لگائے جبکہ ناظم اسلامی جمعیت صوبہ پنجاب حافظ ندیم نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اگر دشمن نے پاکستان پر حملہ کیا تو پاک فوج دشمن کو دندان شکن جواب دے گی اور طلبہ بھی ان کے شانہ بشانہ دشمن کے خلاف صف آرا ہوں گے۔ ادھر قبائلی رہنمائوں ملک مڈ خان‘ ملک سیف اللہ اورکزئی و دیگر نے اعلان کیا ہے کہ اگر بھارت نے جارحیت کی تو لاکھوں قبائلی فوج کا ہراول دستہ ثابت ہو گا۔