پاکستان کی سالمیت اور خود مختاری کا تحفظ یقینی بنائیں گے‘ چین: بھارت تحمل کا مظاہرہ کرے‘ ایران

27 دسمبر 2008
اسلام آباد (ریڈیو نیوز/ ریڈیو مانیٹرنگ/ اے پی پی/ آن لائن) چینی اور ایرانی وزراء خارجہ نے پاکستان اور بھارت کے درمیان جاری کشیدگی کے تناظر میں گذشتہ روز اپنے پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی کو ٹیلی فون کیا‘ چین نے پاکستان بھارت موجودہ کشیدگی میں پاکستان کی سالمیت اور علاقائی خودمختاری کے تحفظ کی یقین دہانی کرائی ہے۔ ایران نے کہا ہے کہ جنوبی ایشیا میں عدم استحکام پورے خطے کو متاثر کرے گا۔ اس لئے بھارت پر زور دیا ہے کہ وہ صبرو تحمل کا مظاہرہ کرے۔ نجی ٹی وی کے مطابق چینی وزیر خارجہ یانگ جی چی نے جمعہ کے روز وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو ٹیلیفون کیا جس میں پاک بھارت کشیدگی‘ خطے کی موجودہ صورتحال پر گفتگو کی گئی۔ اس موقع پر چینی وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارت تحمل کا مظاہرہ کرے ‘ خطے میں امن دونوں ممالک کے مفاد میں ہے‘ ممبئی حملوں کے بعد پاکستان نے مثبت ردعمل کا مظاہرہ کیا۔ گفتگو میں شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ثبوت ملنے پر بھارت کے ساتھ مشترکہ تحقیقات کے لئے تیار ہیں‘ بھارت ذمہ داری کا ثبوت دے۔ چینی وزیر خارجہ نے کہا کہ دونوں ممالک کو چاہئے کہ معاملات کو مذاکرات کے ذریعے حل کریں کیونکہ پاکستان بھارت کشیدگی کا فائدہ دہشت گردوں کو ہو گا‘ انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کو کشیدگی کم کرنی چاہئے‘ چین خطے میں امن اور استحکام کے لئے پاکستان سے قریبی رابطہ رکھے گا۔ دونوں وزرائے خارجہ نے پاک چین سٹریٹجک‘ سیاسی اور اقتصادی تعاون میں پیشرفت پر اطمینان کا اظہار کیا۔ یہ بات نوٹ کی گئی کہ اکتوبر میں صدر آصف علی زرداری کے دورہ چین کے بعد اقتصادی روابط نے زور پکڑا ہے۔ ایران کے وزیر خارجہ منوچہر متقی نے شاہ محمود سے گفتگو میں کہاکہ انہوں نے ٹیلی فون پر بھارتی وزیر خارجہ پرناب مکھرجی سے بات چیت کرتے ہوئے بھارت پر زور دیا ہے کہ وہ صبر و تحمل سے کام لے۔ انہوں نے کہاکہ جنوبی ایشیا میں عدم استحکام پورے خطے کو متاثر کرے گا۔ انہوں نے کہاکہ ایران پاک بھارت کشیدگی کم کرانے کے لئے دونوں ملکوں سے رابطہ میں رہے گا۔ اے این این نے چینی میڈیا رپورٹس کے مطابق یانگ جی چی نے شاہ محمود قریشی سے کہاکہ پاکستان اور بھارت دونوں نے ممبئی حملوں کے بعد دہشت گردی سے نمٹنے کے عزم کا اظہار کیا ہے دونوں ملک ہمارے اہم ہمسائے ہیں اور ہمیں اُمید ہے کہ وہ علاقائی امن و استحکام کو اپنے ذہن میں رکھیں گے اور متعلقہ معاملات کو مذاکرات اور مشاورت کے ذریعے مناسب انداز میں طے کریں گے۔ پاکستان اور بھارت اپنے باہمی تعلقات میں بہتری کے سلسلے کو برقرار رکھتے ہوئے امن کا عمل آگے بڑھائیں۔ ایرانی وزارت خارجہ سے جاری بیان کے مطابق منوچہر متقی نے مشیر خزانہ شوکت ترین کے حالیہ دورہ تہران کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان اور ایران کے درمیان باہمی دلچسپی کے معاملات پر مشاورت جاری ہے۔ شاہ محمود قریشی نے ملتان میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے چینی اور ایرانی وزرائے خارجہ سے ٹیلی فونک گفتگو کی تصدیق کی۔ انہوں نے کہاکہ چین اور ایران دونوں ہمارے اچھے دوست اور ہمسائے ہیں جن کی سوچ مثبت ہے۔ انہوں نے کہاکہ عالمی برادری پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کو ختم کرانا چاہتی ہے خطے میں کشیدگی سے دیگر ممالک بھی متاثر ہو سکتے ہیں اس لئے وہ بھی امن اور سیاسی استحکام کی خواہش رکھتے ہیں۔ آن لائن کے مطابق چینی وزیر خارجہ نے کہاکہ پاک چین دوستی لازوال ہے‘ مشکل صورتحال میں پاکستان کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔ منوچہر متقی نے کہاکہ بھارت پرامن ہے اور مذاکرات شروع کرے۔ شاہ محمود نے کہاکہ مہم جوئی کا منہ توڑ جواب دیں گے‘ بھارت تعاون کا مثبت جواب دے۔