’’انسانیت کی تذلیل‘‘

27 اگست 2009
مکرمی!20اگست کو پاکستان کے تمام ٹی وی چینلز نے ہلال احمر کے دفتر میں یا میدان میں غربا میں چیزوں کی تقسیم کی رپورٹ دکھائی۔ ایک نجی ٹی وی چینل نے اسے ’’ایک اور کلچر میں اضافہ‘‘ کہا۔ بدنظمی کا عالم دیکھ کر خدا تعالیٰ سے دعا کی کہ یا اللہ ہماری غربت اور انسانیت کی تذلیل کو یہاں پر ہی روک دے اس ذرہ بھر خیرات کے لئے بوڑھے بچے ناتواں غریب لوگ ساری دنیا میں تماشا بن گئے کاش اسی وقت آسمان سے من و سلویٰ گر جاتا۔ جس کے لیے لوگوں نے چھڑیاں اور خواتین نے جوتے کھائے۔جیبیں بھی کٹیں اور شناختی کارڈز بھی کھو گئے پھر گھروں کو واپس خالی ہاتھ لوٹ کر پچاس روپے کرایہ کے لیے مانگتے رہے۔ ہمیں اپنے پیارے وطن میں حق عزت حاصل کرنے کے لیے جہالت ختم کرنے کی ضرورت ہے۔ جہالت تعلیم سے دور ہوگی۔ میرے خیال میں اگر راشن کارڈ کا اجرأ کر دیا جائے تو بدنظمی پر کنٹرول پایا جا سکتا ہے۔ ساجدہ حنیف لاہور