مشرف کے ٹرائل کےلئے قرارداد پارلیمنٹ میں آئی تو کردار ادا کرونگی: سپیکر

27 اگست 2009
اسلام آباد (ثناءنےوز + اے پی پی) سپیکر قومی اسمبلی ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے کہاہے کہ سابق صدر پرویز مشرف کے ٹرائل کے بارے میں قرار داد پارلیمنٹ میں لائی گئی تو اسے منظور کرانے میں اپنا کردار ادا کروں گی تاہم آرٹیکل 6 سے متعلق پارلیمنٹ ہی متفقہ فیصلہ کرے گی اس بارے میں تمام جماعتوں نے اپنا مو¿قف دے دیا ہے جبکہ سعودی سفیر سے ملاقات میں ان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور سعودی عرب مذہبی‘ تاریخی اور ثقافتی رشتوں میں جڑے ہیں۔ ایک نجی ٹی وی سے انٹرویو میں انہوں نے کہا ملک میں 62 سال سے ایشوز چل رہے ہیں ان کے حل میں کچھ وقت لگے گا اس مقصد کے لئے سب کو ساتھ لے کر چلنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا چودھری نثار کو میں نے قرارداد پیش کرنے سے نہیں روکا یہ ان کی مرضی ہے کہ وہ قرارداد ایوان میں پیش کرتے ہیں یا نہیں، آرٹیکل 6 پر تمام جماعتوں نے اپنا مو¿قف دیا ہے‘ میں چاہتی ہوں کہ ہم آئین اور اس کے تحت تمام اداروں کو مضبوط کریں۔ ہر کام اتفاق رائے سے ہو تو وہ زیادہ مو¿ثر ہوتا ہے ہم سب کو ذاتی مفاد سے ہٹ کر ملک و قوم کے فائدے کا سوچنا چاہئے، پارلیمنٹ مضبوط ادارے کی طرف بڑھ رہی ہے اور پارلیمنٹ کو فرد کے بجائے قواعد و ضوابط کے مطابق چلانا چاہئے جبکہ سعودی عرب کے سفیر عبدالعزیز ابراہیم سے ملاقات میں ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے کہا ہے کہ پاکستان اور سعودی عرب مذہبی، تاریخی اور ثقافتی رشتوں سے جڑے ہیں، سعودی عرب نے ہمیشہ مشکل وقت میں پاکستان کا ساتھ دیا، توقع ہے کہ سعودی عرب فرینڈز آف ڈیموکرٹیک پاکستان فورم پر پاکستان کو مسائل سے نکالنے کےلئے قائدانہ کردار ادا کرے گا۔ بدھ کو پارلیمنٹ ہاﺅس میں ہونے والی یہ ملاقات 40 منٹ سے زائد جاری رہی۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی اور انتہا پسندی نے خطے کے امن اور ترقی کو بری طرح متاثر کیا ہے، اس مسئلے پر قابو پانے کےلئے اجتماحی طور پر کوششیں کرنا ہوں گی۔ انہوں نے خطے میں قیام امن کےلئے سعودی عرب کی کوششوں کی تعریف کی۔ اس موقع پر سعودی سفیر نے کہا کہ ان کا ملک پاکستان کو ایک خوشحال اور مستحکم ملک کے طور پر دیکھنے کا خواہش مند ہے۔ انہوں نے سپیکر ڈاکٹر فہمیدہ مرزا کو یقین دلایاکہ ان کا ملک معیشت کے تمام شعبوں میں پاکستان کی بھر پور مدد کرے گا۔