A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

شوگر اور فلور ملز مالکان نے ذخیرہ اندوزی ختم نہ کی تو دوبارہ کریک ڈائون شروع کردیا جائے گا : شہباز شریف

27 اگست 2009
لاہور + شیخوپورہ + فاروق آباد (سٹاف رپورٹر + کامرس رپورٹر + نامہ نگار خصوصی + نامہ نگار + وقت نیوز) وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ پنجاب میں کسی بھی جگہ آٹے کی قلت نہیں ہے بلکہ صوبہ سرحد کو بھی آٹا فراہم کر رہے ہیں چینی کا ابھی تھوڑا بحران ہے جو چند روز میں ختم کر دیا جائیگا۔ اگر شوگر اور فلور ملز نے ذخیرہ اندوزی ختم نہ کی تو دوبارہ کریک ڈائون شروع کر دیا جائے گا۔ آٹے اور چینی کے حصول کیلئے لمبی لائنیں لگنا اچنبے کی بات نہیں ہے پنجاب میں ہم اپنا پیٹ کاٹ کر صوبہ کے وسائل سے عوام کو سستا آٹا اور چینی فراہم کر رہے ہیں۔ لاہور سے نکل کر صوبے کے کونے کونے میں جا کر خود عوام کے مسائل معلوم کر رہا ہوں پورے رمضان میں سستے آٹے کی فراہمی جاری رہے گی۔ قیمتوں کو کنٹرول کرنے کی بھرپور کوشش کر رہے ہیں رمضان اور سستا بازار میں فروخت ہونے والے پھلوں اور سبزیوں کے معیار کو بھی بہتر بنایا جائے گا۔ تمام کھلی مارکیٹوں میں چینی کی 47 روپے فی کلو فروخت ہر قیمت پر یقینی بنائینگے۔ اگر کسی جگہ زائد قیمت وصول کرنے کی شکایت ملی تو متعلقہ مل مینجر‘ ڈیلر اور پرچون فروشوں کیخلاف سخت کارروائی کی جائیگی۔ چیف سیکرٹری وزراء کے ساتھ مل کر رمضان بازاروں کا دورہ کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز شیخوپورہ‘ فاروق آباد اور لاہور میں مختلف رمضان بازاروں کے اچانک دورہ کے موقع پر صارفین سے خطاب‘ صحافیوں سے گفتگو کرتے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلی کی صدارت میں ایوان وزیراعلی میں قومی مالیاتی کمشن ایوارڈ کے حوالے سے بھی اعلی سطح اجلاس ہوا۔ اجلاس میں قومی مالیاتی کمشن ایوارڈ میں پنجاب کی جانب سے پیش کی جانے والی متعدد تجاویز پر تفصیلی غور و خوض کیا گیا اور سفارشات کو حتمی شکل دی گئی۔ وزیراعلی شیخوپورہ میںصرف ایک سستا رمضان بازار دیکھ کر انتظامیہ پر برس پڑے اور کہا کہ ایسے ڈی سی او کی ضرورت نہیں جو عوام کی خدمت کرنے سے عاری ہوں۔ انہوںنے کہا کہ ڈی سی او شیخوپورہ کے خلاف سخت نوٹس لیا جا رہا ہے تا کہ صوبے کے دوسرے انتظامی افسر بھی اس کی نا اہلی سے سبق سیکھیں۔ وزیر اعلی نے پولیس کو بھی سختی سے ہدایت کی کہ وہ شوگر اور فلور ملوں کے باہر مستعدی سے فرائض انجام دیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے شیخوپورہ اور فاروق آباد میں سستے رمضان بازاروں کے دورہ کے بعد لاہور واپس پہنچنے پر گلشن راوی رمضان بازار کا دورہ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ میاں شہباز شریف نے کہا کہ تاریخ میں پنجاب میں عوام کو سستا ترین آٹا پہلی بار فراہم کیا جار ہا ہے۔ جب آٹا مارکیٹ ریٹس سے 350 روپے سستا ملے گا تو لائنیں لگنا حیرانی کی بات نہیں ہے تا ہم لائنوں اور دھکم پیل کو کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب میں چینی 45 اور 48 روپے فی کلو گرام مل رہی ہے تا ہم لاہور میں یہ مہنگی ہے جسے میں تسلیم کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ لاہور میں چینی مہنگے داموں فروخت کرنے کا میں نے سخت نوٹس لیا ہے اور اب یہ معاملہ کافی بہتر ہو رہا ہے۔ ایسے عناصر جو سستا آٹا اپنی دکانوں پر لے کر جاتے ہیں عوام ان پر نظر رکھیں۔ وزیراعلی کے دوروں کے دوران عوام نے رمضان بازار انتظامیہ کیخلاف شکایتوں کے ڈھیر لگا دئیے۔ وزیراعلی نے ڈی سی او شیخوپورہ کی جانب سے تسلی بخش جواب نہ ملنے پر سخت برہمی کا اظہار کیا۔ فاروق آباد میں ’’سستا رمضان بازار‘‘ کے اچانک دورے کے موقع پر وزیراعلی نے کہا کہ عوام کو ریلیف دینے کے لئے اربوں روپے کی سبسڈی دی گئی ہے۔ وزیراعلی کے ہمراہ ایم این اے عرفان ڈوگر بھی تھے جبکہ سکیورٹی کے اہلکاروں نے رکن قومی اسمبلی عرفان ڈوگر سمیت صحافیوں کو بھی دھکے دئیے۔ شیخوپورہ میں خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی نے کہا کہ آٹے اور چینی کی فراہمی کو بھی یقینی بنانے کے لئے اقدامات اٹھا رہے ہیں اور اس ضمن میں قائم کی گئی ٹاسک فورس کو متحرک اور فعال بنایا جا رہا ہے۔ ارکان قومی اسمبلی میاں محمد جاوید لطیف‘ سردار عرفان ڈوگر‘ حاجی غلام نبی‘ پیر اشرف رسول‘ خرم اعجاز چٹھہ‘ رحمت علی ڈوگر اور ضلعی انتظامیہ کے افسران بھی موجود تھے۔ انہوں نے صحافیوں کی نشاندہی پر ڈی سی او شیخوپورہ کو طلب کرکے رمضان سستا بازار کو بڑھانے کی ہدایت کی۔ علاوہ ازیں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ معاہدے کی پاسداری کرتے ہوئے شوگر ملیں 24 گھنٹے میں چینی کے ذخائر مارکیٹ میں لے آئیں ورنہ معاہدہ کالعدم کرتے ہوئے تمام سٹاک قبضے میں لے کر کھلی مارکیٹ میں چینی کی فروخت شروع کر دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ اتوار کو ایف بی آر کے دفاتر کھلوا کر ٹیکس چھوٹ کا نوٹیفکیشن جاری کرانے کا مقصد عوام کو فوری ریلیف دلوانا تھا مگر اتنی تاخیر کے باوجود شوگر ملز میں موجود چینی مارکیٹ میں نہیں لائی گئی اور اگر آئندہ 24 گھنٹے کی مہلت گزرنے کے باوجود چینی مارکیٹ میں نہ لائی گئی تو حکومت راست اقدامات کرے گی۔ علاوہ ازیں پنجاب آج قومی مالیاتی کمشن کے پہلے اجلاس میں صوبوں کے مابین وسائل کی تقسیم آبادی کی بنیاد پر رکھنے کا اپنا مضبوط موقف تجویز کرے گا۔ ذرائع کے مطابق یہ فیصلہ وزیراعلی پنجاب میاں شہباز شریف کی زیر صدارت ساتویں قومی مالیاتی کمشن ایوارڈ کے حوالے سے اعلی سطح کے اجلاس میں کیا گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ اجلاس میں کہا گیا ٹیکس وصولی کی بجائے ٹیکس جنریشن پر بھی بات کی جا سکتی ہے۔