A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

بلوچ عوام کو حقوق دینے کے ساتھ بگٹی کے قاتلوں کو سزا دی جائے : نوازشریف

27 اگست 2009
لاہور (خصوصی رپورٹر+اے پی پی) مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نوازشریف سے صدر آزاد جموں و کشمیر راجہ ذوالقرنین اور جمہوری وطن پارٹی کے رہنما شاہ زین بگٹی نے انکی رہائش گاہ رائے ونڈ میں الگ الگ ملاقات کی اس موقع پر نواز نے کہاکہ بلوچستان پر لگائے ہوئے آمر کے زخموں کا مداوا جمہوری حکومت کا فرض ہے۔ بلوچستان کے عوام کو انکے حقوق دینے کے ساتھ ساتھ نواب اکبر بگٹی کے قاتلوں کو فی الفور سزا دی جائے ۔ بلوچستان کے عوام کو قومی دھارے میں لانے کیلئے اقدامات کئے جائیں‘ غیرجمہوری قوتوں کی پالیسیوں سے تحریک آزادی کشمیر کو نقصان پہنچا ہے اور پاکستان کا اصولی موقف بھی متاثر ہوا ہے۔ شاہ زین سے گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے کہا کہ سیاسی معاملات کو سیاسی طریقے سے حل کرنا چاہئے‘ بلوچستان کو تعمیر و ترقی دینا انتہائی اہم ہے تاکہ وہاں کے لوگ محرومی کا شکار نہ ہوں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ نواب بگٹی کے قتل پر فوراً ایف آئی آر درج کرکے قانون کے مطابق سزا دی جائے ۔ انہوں نے بلوچستان کے وسیع و عریض علاقے میں متاثرین کی بحالی اور بنیادی سہولتوں کی فراہمی‘ تعلیم‘ علاج کی فراوانی اور مواصلاتی نظام کی بہتری پر توجہ دینے پر زور دیا۔ شاہ زین بگٹی نے نوازشریف اور مسلم لیگ (ن) کے اصولی مئوقف کی تعریف کی اور درخواست کی کہ بلوچ قبائل کی اپنے علاقوں کو واپسی اور بحالی کو یقینی بنانے میں مدد دی جائے اور بگٹی قبیلے کے نقصانات کا ازالہ کیا جائے ۔ شاہ زین نے کہاکہ بلوچستان کے عوام کی حب الوطنی شک و شبہ سے بالاتر ہے۔ نوازشریف نے مسلم لیگ (ن) کی طرف سے بگٹی کے قتل کیخلاف ایف آئی آر درج کرنے‘ بگٹی قبائل کی بحالی‘ نقصانات کے ازالے اور انکی گھروں کو واپسی کے سلسلے میں مکمل مدد اور تعاون کا یقین دلایا۔ راجہ ذوالقرنین سے گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے کہاکہ کشمیریوں کا حق خودارادیت کا حصول ان کا جائز اصولی حق ہے اور مسلم لیگ (ن) اسکی بھرپور حمایت کرتی ہے۔ انہوں نے جمہوری حکومت سے توقع کا اظہار کیا کہ وہ کشمیر کی آزادی کے ساتھ ساتھ ملک میں آئین اور قانون کی بالادستی کے ضمن میں اپنی ذمہ داریاں پوری کرتے ہوئے ڈکٹیٹر کیخلاف آئین توڑنے‘ بیگناہ لوگوں کو مروانے اور منتخب اور جمہوری حکومت کو ختم کرنے کے جرم کا احتساب کریگی۔ انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ (ن) قانون کی حکمرانی کو یقینی بنانے اور آئین شکنی کا راستہ روکنے کے لئے اپنی ذمہ داریاں بھرپور طریقے سے ادا کریگی۔ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ کشمیر کی آزادی اور ملک میں جمہوریت کے استحکام‘ آئین اور قانون کی عملداری‘ مہنگائی‘ لوڈشیڈنگ اور بیروزگاری کے خاتمے اور امن و امان کے قیام پر توجہ دے۔