بلدیاتی اداروں کے مستقبل کا فیصلہ آئین کے مطابق ہو گا: وزیراعظم

27 اگست 2009
اسلام آباد (ثناء نیوز) وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ بلدیاتی اداروں کے مستقبل کا تعین آئین اور قانون کے مطابق ہو گا۔ شفافیت، احتساب، گڈ گورننس حکومت کی اعلیٰ ترین ترجیحات میں شامل ہے اس مقصد کیلئے تمام کاوشیں بروئے کار لائی جا رہی ہیں قومی ایشوز کے بارے میں سیاسی و جمہوری قوتوں کی مشاورت کو اہمیت دی جا رہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں ایم کیو ایم کے اراکین پارلیمنٹ سے ملاقات میں کیا جو وزیر برائے سمندر پار پاکستانیز ڈاکٹر فاروق ستار کی قیادت میں ان سے ملے۔ وزیراعظم نے کہا کہ جمہوری اداروں کا استحکام ملک کی ترجیحات میں شامل ہے‘ ہم تمام جمہوری قوتوں کو اعتماد میں لے کر ریاستی اداروں کے اختیارات میں توازن پیدا کرنا چاہتے ہیں صاف شفاف نظام حکومت متعارف کرایا ہے حکومت، شفافیت، احتساب و گڈ گورننس کے معاملے پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔ وزیراعظم نے کہا کہ انہوں نے صوبوں کی متفقہ سفارشات کو صدر مملکت کو بھجوا دیا ہے‘ وزارت قانون میں ان سفارشات کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔ دریں اثناء وزیراعظم نے علمائے کرام پر زور دیا ہے کہ وہ ملک میں مذہبی ہم آہنگی کے فروغ اور انتہا پسندی و دہشت گرد کے خاتمے کے لئے اپنا موثر کردار ادا کریں۔ یہ بات انہوں نے اسلام آباد میں پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے علماء ونگ کے وفد سے ملاقات میں کہی۔ وزیراعظم نے کہا کہ پر امن معاشرے کی تشکیل میں علماء کرام کا اہم کردار ہے۔ اس حوالے سے علماء کرام کو چاہئے کہ وہ حکومت کے ساتھ تعاون کریں۔