نوازشریف آرٹیکل 6 کے تحت مشرف کا ٹرائل چاہتے ہیں تو سڑکوں پر کیوں نہیں آتے : منور حسن

27 اگست 2009
لاہور (خصوصی رپورٹر) امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف پرویز مشرف کا آرٹیکل 6 کے تحت ٹرائل چاہتے ہیں تو سڑکوں پر کیوں نہیں آتے ‘ مولانا صوفی محمد کو آئین کے خلاف بات کرنے کی پاداش میں گرفتار کیا جبکہ دو مرتبہ آئین توڑنے والے مشرف کو حکومت تمام سہولتیں دے رہی ہے۔ امریکی ڈرون طیارے پاکستانی ہوائی اڈوں سے اڑ کر عوام پر حملے کر رہے ہیں‘ جماعت نے اسلام کو کیپٹل ازم اور کمیونزم کے مقابلے میں پیش کیا اور ملک میں نفاذ اسلام کے حامیوں کو ایک پلیٹ فارم مہیا کیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی کے 68ویں یوم تاسیس کے موقع پر دفتر جماعت اسلامی لٹن روڈ میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر امیر جماعت اسلامی لاہور امیر العظیم نے بھی خطاب کیا جبکہ معروف کارکن حاجی محمد رفیق مرحوم کے نام سے منسوب لائبریری کا افتتاح کیا گیا۔ منور حسن نے مزید کہا کہ نواز شریف کے رائے ونڈ میں بیٹھ کر مشرف کے خلاف آرٹیکل چھ کے تحت مقدمہ چلانے کے بیانات سے ان پر مقدمہ نہیں چلے گا۔ وہ اس مقصد کے لئے جدوجہد نہیں کرتے تو انہیں حکومتی اتحاد کا حصہ ہی سمجھا جائے گا۔ بلوچستان سمیت نیشنلسٹ جماعتیں پاکستان کے آئین کو تسلیم نہیں کرتیں اور نیا سوشل کنٹریکٹ چاہتی ہیں ان کے خلاف تو کوئی کارروائی نہیں ہوتی۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کی دوستی نے ہمیشہ پاکستان کو نقصان پہنچایا۔ ہماری فوجی حکومت نے امریکہ کو لاجسٹک سپورٹ سمیت تمام سہولتیں دیں اور افغانستان سے طالبان کی حکومت کو ختم کر دیا لیکن افغانستان میں امریکہ بند گلی میں پھنس چکا ہے لیکن ہماری جمہوری حکومت بھی امریکہ کو تمام لاجسٹک سپورٹ دے رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت میں شامل خود کو بڑی جماعتیں کہلا نے والی چھ جماعتیں جن میں مولانا فضل الرحمن کی جے یو آئی (ف)، ایم کیو ایم، اے این پی اور پیپلز پارٹی شامل ہیں اور جنہیں مسلم لیگ ن کی بھی حمایت حاصل ہے‘ امریکی پالیسیوں پر عمل پیرا ہیں۔ اسلام آباد میں سفارتخانے کے نام پر چھاؤنی بنائی جا رہی ہے۔ حقیقتاً امریکہ پاکستان کے ایٹمی پروگرام پر قبضہ کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف امریکہ کی حمایت اس لئے کر رہے ہیں کہ انہیں امریکہ یقین دلا چکا ہے کہ اگلی باری ان کی ہے۔ انہوں نے کہا ’’ گو امریکہ گو ‘‘ محض نعرہ نہیں بلکہ اس کے پیچھے بھی نظریہ اور سوچ موجود ہے کیونکہ امریکہ ہی تمام برائیوں کی جڑ ہے اسے یہاں سے نکالے بغیر امن قائم نہیں ہو سکتا۔ امیر العظیم نے کہا کہ جماعت اسلامی کو قائم ہوئے 68 برس گزر چکے لیکن اس کے نظریات، جدوجہد، سوچ اور قوت میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔