ماں کی درخواست مسترد، ہائیکورٹ نے 12 سالہ بچی باپ کے حوالے کر دی

26 مئی 2016

لاہور (وقائع نگار خصوصی) ہائیکورٹ نے بارہ سالہ بچی کی تحویل کے لئے ماں کی درخواست مسترد کرتے ہوئے بچی کو باپ کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی۔ فیصلے کے بعد کمرہ عدالت کے باہر رشتہ دار آپس میں الجھتے رہے۔ جسٹس صداقت علی خان نے ننکانہ صاحب کی نوشین بی بی کی درخواست پر سماعت کی۔ خاتون نے موقف اختیار کیا تھا کہ اس کے سابق شوہر نے اس کی بیٹی کو حبس بیجا میں رکھا ہے لٰہذا اسکی بیٹی بازیاب کرا کے اس کے حوالے کرنے کا حکم دیا جائے۔ ننکانہ صاحب پولیس نے بچی کو بازیاب کرا کے عدالت میں پیش کیا۔ خاتون کے سابق شوہر عبداللہ نے عدالت کو بتایا کہ اسکی سابق بیوی نے تیسری شادی کر رکھی ہے جس کی وجہ سے اسکی بیٹی کی ماں کے پاس بہتر پرورش ممکن نہیں ہے۔ عدالت نے ریمارکس دئیے کہ بچوں کی بہتر پرورش کے لئے اچھے والدین کی ضرورت ہوتی ہے۔ عدالت نے بچی سے استفسار کیا تو بچی نے والد کے ساتھ جانے کی خواہش کا اظہار کر دیا۔
بچی/ حوالے

روحانی شادی....

شادی کام ہی روحانی ہے لیکن چھپن چھپائی نے اسے بدنامی بنا دیا ہے۔ مرد جب چاہے ...