حکومت کا بوجوہ طالبان امیر ملا اختر منصور کی ہلاکت کی تصدیق سے گریز

26 مئی 2016

اسلام آباد (محمد نواز رضا+ وقائع نگار خصوصی) امریکہ کے بعد طالبان افغانستان نے بھی ڈرون حملہ میں ملا اختر منصور کی ہلاکت کی تصدیق کر دی لیکن حکومت پاکستان بوجوہ ان کی ہلاکت کی تصدیق کرنے سے گریز کر رہی ہے وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان‘ ڈرون حملے سے پیدا ہونے والی صورتحال سے ملک کو نکالنے کیلئے سرگرم عمل ہیں۔ انہوں نے ڈرون حملہ کے بعد عالمی سطح پر پاکستان کیلئے پیدا ہونے والی مشکلات کو دور کرنے کی حکمت عملی تیار کی ہے اور شناختی کارڈ کی ازسرنو تصدیق کیلئے 48 گھنٹے میں روڈمیپ تیار کرنے کا نادرا کو ٹارگٹ دیا ہے۔ اس فیصلے سے پوری دنیا کو یہ پیغام دیا گیا ہے کہ پاکستان غیر ملکیوں کو شناختی کارڈز کو منسوخ کرنے میں سنجیدگی کا مظاہرہ کر رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم نواز شریف کی ملک میں عدم موجودگی میں وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان سیاسی و عسکری قیادت کے درمیان ’’پل‘‘ کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ اس واقعہ سے پاکستان کی راہ میں بچھائے گئے کانٹوں کو چننے کی ذمہ داری چودھری نثار علی خان کو سونپی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق ملا منصور کی ہلاکت کے بعد مستقبل قریب میں طالبان اور افغان حکومت کے درمیان مذاکرات کا سلسلہ بحال ہونے کا امکان نہیں۔
حکومت گریز