تمام شہریوں کے شناختی کارڈزکی دوبارہ تصدیق کا فیصلہ‘ روڈ میپ کیلئے 2 دن کی ڈیڈ لائن

26 مئی 2016

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ+ خبرنگار خصوصی) وزیر داخلہ چودھری نثار کی صدارت میں نادرا ہیڈ کوارٹر میں اہم اجلاس ہوا۔ ولی محمد اور دیگر اہم معاملات پر غور کیا گیا۔ وزیر داخلہ نے نادرا کو تمام شناختی کارڈز کی تصدیق کا روڈ میپ تیارکرنے کیلئے 2 دن کی ڈیڈ لائن دیدی۔ اس موقع پر ملک بھر میں تمام شہریوں کے شناختی کارڈز کی تصدیق کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ تمام شہریوں کے شناختی کارڈز کی ازسرنو تصدیق ہو گی۔ فیصلہ غیرملکیوں کے پاس پاکستانی شناختی کارڈ ہونے کے باعث کیا گیا۔ چودھری نثار نے کہا کہ ہمیں دنیا کو پیغام دینا ہے کہ پاکستانی شناختی کارڈ حاصل کرنا آسان نہیں۔ ہمیں اپنا آج بہتر بنانے کے ساتھ مستقبل کی حکمت عملی بنانی ہے۔ پاکستان کے ساتھ منفی چیزوں کا منسوب ہونا ناقابل برداشت ہے۔ صورتحال سے نمٹنے کیلئے ہنگامی لائحہ عمل اختیار کیا جائیگا۔ نادرا اور کرپشن ایک ساتھ نہیں چل سکتے۔ غیر ملکیوں کے زیر استعمال شناختی کارڈز کی نشاندہی کی جائے۔ قومی سلامتی کے ادارے شناختی کارڈز کی تصدیق کے عمل میں تعاون کریں گے۔ قومی شناختی کارڈ کوغیرملکیوں کے ہاتھوں استعمال کو سختی سے روکیں گے۔ اہم اجلاس میں ڈی جی پاسپورٹ نے بھی شرکت کی۔ علاوہ ازیں ایف آئی اے نے وزیر داخلہ کی ہدایت پر ولی محمد کی شہریت کی تصدیق کرنے والے ڈی سی کو تفتیش میں شامل ہونے کے لئے سمن جاری کر دیا۔ مذکورہ ڈی سی او محمد طاہر نے چمن تعیناتی کے دوران ولی محمد کی پاکستانی شہریت کی تصدیق کی تھی۔ ایف آئی اے ذرائع کے مطابق ڈی سی نے 2005ء میں ولی محمد کے پاسپورٹ کے لئے اس کی پاکستانی شہریت کی تصدیق کی تھی جبکہ ولی محمد کے شناختی کارڈ کی تصدیق کرنے والے تحصیل دار کو گزشتہ روز کوئٹہ سے گرفتار کرلیا گیا تھا۔