پشاور: گاڑی پر فائرنگ‘ ایف سی کا ڈسٹرکٹ افسر‘ ڈرائیور اور محافظ سمیت شہید

26 مئی 2016

پشاور+ لاہور (نیوز ایجنسیاں+بیورورپورٹ+ خصوصی رپورٹر) پشاور میں دہشت گردوں کی گاڑی پر فائرنگ سے ایف سی کا ڈسٹرکٹ افسر اپنے ڈرائیور اور محافظ سمیت شہید ہو گیا جبکہ 3 اہلکار زخمی ہو گئے۔ حملے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کی ہے۔ تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز صبح کے وقت پشاور کے علاقے رنگ روڈ پر پتنگ چوک کے مقام پر فقیر آباد پولیس سٹیشن کی حدود میں ایف سی کے ڈسٹرکٹ افسر امیر بادشاہ لال دین کالونی میں واقع اپنے گھر سے ایف سی ہیڈ کوارٹر جارہے تھے کہ اس دوران موٹر سائیکل سوار دہشت گردوں نے ان کی گاڑی پر اندھا دھند فائرنگ کر دی۔ جملے میں امیر بادشاہ سمیت تین اہلکار شہید ہوگئے جن میں محافظ اور ڈرائیور شامل ہیں جبکہ 3 اہلکار زخمی ہو گئے۔ دہشت گرد فرار ہوتے ہوئے شہید ہونے والے اہلکاروں کا اسلحہ بھی ساتھ لے گئے۔ پولیس اہلکار کے مطابق اس واقعہ کے بعد پولیس اور ایف سی کی بھاری نفری جائے وقوعہ پہنچی اور سارے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے جائے وقوعہ اور آس پاس کے علاقوں میں بڑے پیمانے پر تلاشی کا عمل شروع کر دیا ہے۔ شہید ہونے والے امیر بادشاہ گریڈ 18 کے افسر تھے۔ علاوہ ازیں وزیراعظم محمد نواز شریف نے پشاور میں دہشت گردی کے واقعہ کی مذمت کی ہے۔ وزیراعظم آفس کے بیان کے مطابق وزیراعظم نے سکیورٹی اہلکاروں کو خراج عقیدت پیش کیا جنہوں نے اپنے شہریوں کے تحفظ کا انتہائی اعلیٰ فرض ادا کرتے ہوئے شہادت پائی۔ وزیراعظم نے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی بے مثال قربانیاں دہشت گردوں کے مکروہ عزائم کے خلاف پاکستان کے تحفظ کے لیے ہیں۔ بحیثیت قوم ہم اس بات سے آگاہ ہیں کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں انسانی جانی نقصان کے حوالے سے ہم بھاری قیمت ادا کر رہے ہیں تاہم ہمارے پاس اپنی بقا کے لیے بہادری اور جرات سے جنگ لڑنے کے سوا کوئی اور آپشن نہیں۔ انہوں نے دعا کی کہ اللہ تعالیٰ شہداء کی ارواح کو جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائے اور سوگوار خاندانوں کو ناقابل تلافی نقصان برداشت کرنے کا حوصلہ دے۔ قوم دہشت گردی کیخلاف ہے۔ اس ملک سے دہشت گردی کے ناسور کا خاتمہ کر کے دم لے گی۔بیورو رپورٹ کے مطابق شہید ہونے والے ایف سی کے 3اہلکاروں کی نماز جنازہ ایف سی ہیڈ کوارٹر میں ادا کر دی گئی ہے جبکہ واقعہ کی ایف آئی آر محکمہ انسداد دہشت گردی میں درج کرلیا گیا ہے۔ شہید اہلکاروں کی نماز جنازہ میں یف سی اور پولیس کے عالیٰ افسران سمیت دیگر اہلکاروں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ نمازجنازہ کی ادائیگی کے بعد شہداء کی میتوں کو ان کے آبائی علاقوں کو روانہ کر دیا گیا جہاں انہیں پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ سپردخاک کر دیا گیا۔