نیب سابق وزیر خیبرپی کے سردار بابک‘ 802 ارب روپے کے مضاربہ سکینڈل میں مفتی احسان کیخلاف ریفرنسز دائر کریگا

26 مئی 2016

اسلام آباد (این این آئی) نیب کے ایگزیکٹو بورڈ نے ناجائز ذرائع سے اثاثے بنانے اور سرکاری فنڈز میں خوردبرد کے الزام میں سابق صوبائی وزیر تعلیم خیبر پی کے اور رکن صوبائی اسمبلی سردار حسین بابک کے خلاف شکایت کی جانچ پڑتال، مفتی احسان الحق و دیگر کے خلاف بدعنوانی، لوگوں کو بڑے پیمانے پر دھوکہ دے کر مبینہ طور پر.2 8 ارب روپے لوٹنے کے الزام میں ریفرنسز دائر کرنے کا فیصلہ کیا۔ اس حوالے سے قومی احتساب بیورو ایگزیکٹو بورڈ کااجلاس چیئرمین نیب قمرزمان چوہدری کی صدارت میں ہوا۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ نے سابق چیف میٹرو پولیٹن پلانر/سابق ڈائریکٹر جنرل لاہور ڈویلپمنٹ اٹھارٹی شیخ عبدالرشید اور دیگر کے خلاف بدعنوانی ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کیا۔ ملزموں نے ایل ڈی اے کی اراضی کی خریدوفروخت میں دوگنا نقصان پہنچانے، 38 پلاٹوں کو غیر قانونی طریقے سے خود حاصل کرنے، دیگر افراد اور رشتہ داروں میں تقسیم کرنے کا الزام ہے، اجلاس میں مفتی احسان الحق و دیگر کے خلاف بدعنوانی ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کیا گیاملزم پر مضاربہ سکینڈل میں لوگوں کو بڑے پیمانے پر دھوکہ دینے اور 8 ارب روپے لوٹنے کا الزام ہے، ایگزیکٹو بورڈ نے ڈائریکٹر جنرل سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی منظور قادر اور دیگر کے خلاف تحقیقات کی منظوری دی ملزموں پراختیارات سے تجاوز اور نہر خیام کی زمین غیر قانونی طریقے سے الاٹ کرنے کا الزام ہے جس سے قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ نے میسرز تارمیک پاک کمپنی کے ڈائریکٹرز/ مالکان اورمحکمہ سی اینڈ ڈبلیو پنجاب کے افسروں اور دیگر کے خلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دی، ملزموں پر اختیارات سے تجاوز اور سرکاری فنڈز میں خرد برد کا الزام ہے، جس سے قومی خزانے کو11.939ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ اجلاس میں سابق وائس چانسلر فیڈرل اردو یونیورسٹی کراچی ڈاکٹرظفر اقبال و دیگر کے خلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دی گئی۔ ملزموں نے فیڈرل اردو یونیورسٹی کراچی اور اسلام آباد کی سکیورٹی کی مد میں میسرز سردار سکیورٹی سروسز پرائیویٹ لمیٹڈکو غیر قانونی کام کا آرڈر دے کر خورد برد کی جس سے قومی خزانے کو 90 ملین روپے کا نقصان ہوا۔ ایگزیکٹو بورڈ نے سٹیٹ بینک آف پاکستان، بینک اسلامی،کسب بینک کے افسروں اور دیگر کے خلاف دوبارہ انکوائری کی منظوری دی ملزموں پرکسب بینک کو بینک اسلامی میںغیر شفاف طریقے سے ضم کرنے کا الزام ہے ،ایگزیکٹیو بورڈ نے کوئٹہ میں دلشاد اختر دختر خورشید عالم کو سرکاری زمین پر 119روڈز اور 4 پولز غیر قانونی طریقے سے الاٹ کرنے کے الزام کی انکوائری کی منظوری دی ہے جس سے قومی خزانے کولاکھوں روپے کا نقصان پہنچاا جلاس میں رکن قومی اسمبلی این اے 16ہنگو خیال زمان مزار خان کے خلاف انکوائری کی بھی منظوری دی گئی ملزم پر مشکوک ٹرانزیکشن اور بدعنوانی کا الزام ہے۔ اجلاس میں سابق صوبائی وزیر تعلیم خیبر پی کے سردار حسین بابک کے خلاف شکایت کی جانچ پڑتال کی منظوری دی گئی ان پر ناجائز ذرائع سے اثاثے بنانے اورمحکمہ ورکس اینڈ سروسز میں وزیر اعلی کے منظور کردہ 40 ملین روپے کے فنڈز میں خرد برد کا الزام ہے ،جس سے قومی خزانے کو500ملین روپے کا نقصان پہنچا نیب کے ایگزیکٹیوبورڈ نے علی عثمان سٹاک بروکریج پرائیویٹ لمیٹڈکے مقدمہ میں خالدہ انور،محمد عثمان تصدق کی 98.257ملین روپے رضاکارانہ واپسی کی درخواست منظور کر لی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری نے کہا کہ قومی احتساب بیورو زیرو ٹالرینس کی پالیسی اپناتے ہوئے ملک سے بدعنوانی کے خاتمے کیلئے کوئی کسر نہیں اٹھا رکھے گا، بدعنوانی کے خاتمے کیلئے ہماری پالیسی 2016میں بھی جاری رہے گی، ملک سے کرپشن کے خاتمے کے لئے قانون پر عملدرآمد اور آگہی مہم کے ذریعے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔